• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Juma & Eid Prayer / جمعہ و عیدین > جمعہ کی دوسری اذان کا جواب دینا چاہیئے یا نہیں؟

جمعہ کی دوسری اذان کا جواب دینا چاہیئے یا نہیں؟

Published by Admin2 on 2013/10/31 (799 reads)

New Page 1

مسئلہ ۱۲۹۰ : ۶ رمضان المعظم ۱۳۱۱ ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ خطیب کے سامنے جو اذان ہوتی ہے متقدیوں کو اس کا جواب دینا اور جب دو خطبوں کے درمیان جلسہ کرے مقتدیوں کو دعا کرنا چاہئے یا نہیں؟ بینوا توجروا

الجواب

ہر گز نہ چاہئے یہی احوط ہے ۔ ردالمحتار میں ہے :اجابۃ الاذان ح مکروھۃ نھر الفائق ۴؎ ۔اس وقت اذان کا جواب دینا مکروہ ہے ۔نہر الرائق (ت)

 (۴؎ ردالمحتار      باب الجمعۃ    مطبوعہ مصطفی البابی مصر   ۱/۶۰۷)

پھر درمختار میں ہے :ینبغی ان لا یجیب بلسانہ اتفاقا فی الاذان بین یدی الخطیب۵؎۔خطیب کے سامنے دی جانے والی اذان کا جواب بالاتفاق نہیں دینا چاہئے۔ (ت)

 (۵؎ درمختار     باب الاذان     مطبوعہ مجتبائی دہلی بھارت        ۱/۶۵)

اُسی میں ہے:اذا خرج الامام من الحجرۃ ان کان والا فقیامہ للصعود فلا صلٰوۃ ولا کلام الی تمامھا وقالا لاباس بالکلام قبل الخطبۃ وبعدھا واذاجلس عند الثانی والخلاف فی کلام یتعلق بالاٰخرۃ اماغیرہ فیکرہ اجماعا وعلی ھذا فالتر قیۃ المتعارفۃ فی زماننا تکرہ عندہ والعجب ان المرقی ینہی عن الامر بالمعروف بمقتضی حدیثہ ثم یقول انصتوا رحمکم اﷲ ۱؎ اھ ملخصاًجب امام حجرہ سے نکلے اگر حجرہ ہو، ورنہ جب و ہ منبر پر چڑھنے کے لئے کھڑا ہو تو تمام خطبہ تک نہ نماز ہے اور نہ ہی کلام، صاحبین کہتے ہیں کہ خطبہ سے پہلے اوراس کے بعد گفتگو میں حرج نہیں، اور امام ابویوسف کے نزدیک جب امام بیٹھے اس وقت بھی کلام میں کوئی حرج نہیں ، اور اختلاف اس گفتگو میں ہے جو آخرت سے متعلق ہو لیکن اس کے علاوہ گفتگو تو بالاتفاق مکروہ ہے ، اس بناء پر ہمارے زمانہ میں متعارف ترقیہ ( ان اﷲ وملٰئکتہ یصلون علی النبی الخ) ( خطیب کے منبر پر بیٹھتے وقت پڑھنا) امام اعظم کے نزدیک مکروہ ہے اور تعجب ہے کہ ترقیہ پڑھنے والا امر بالمعروف سے حضور علیہ الصلٰوۃ والسلام کی حدیث کی وجہ سے روکتا ہے اور پھر خود کہتا ہے خاموش رہو، اﷲ تعالٰی  تم پررحم کرے اھ ملخصاً ،(ت)

 (۱؎ درمختار    باب الجمعۃ    مطبوعہ مجتبائی دہلی بھارت        ۱/۱۱۳)

ہاں یہ جوابِ اذن یا دُعا اگر صرف دل سے کریں زبان سے تلفظ اصلاً نہ ہو کوئی حرج نہیں،

کما افادہ کلام علی القاری وفروع فی کتب المذھب ( جیسا کہ علی قاری نے تحریر فرمایا اور اس کی تفصیلات کُتبِ مذہب میں ہیں ۔ ت) اور امام یعنی خطیب تو اگر زبان سے بھی جوابِ اذن دے یا دُعا کرے بلا شبہ جائز ہے

وقد صح کلام الامر ین عن سید الکونین صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم فی صحیح البخاری وغیرہ۔صحیح البخاری وغیرہ میں سیدالکونین صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم سے دونوں معمول ملتے ہیں۔ (ت)

یہ قول مجمل ہے

وتفصیل المقام مع نھایۃ الغایۃ وازالۃ الاوھام فی فتاوٰنا بتوفیق الملک العلام (ا س مقام کی تفصیل ہم نے بتوفیق ملک العلام نہایت تحقیق کے ساتھ اپنے فتاوٰی  میں بیان کردی ہے ۔ت) واﷲ تعالٰی  اعلم


Navigate through the articles
Previous article دیہات میں جمعہ کا حکم خطبہء جمعہ سے متعلق سوالات Next article
Rating 2.75/5
Rating: 2.8/5 (240 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu