• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Juma & Eid Prayer / جمعہ و عیدین > جمعہ سے مستشنیٰ کون کون لوگ ہیں؟

جمعہ سے مستشنیٰ کون کون لوگ ہیں؟

Published by Admin2 on 2013/11/18 (769 reads)

New Page 1

مسئلہ۱۳۶۹: از سرکوں تحصیل کھٹیما ڈاک خانہ ٹنک پور مرسلہ ننھّے خاں صاحب ۱۳ جمادی الآخرہ۱۳۳۸ھ

جمعہ کی نماز ہر شخص پر فرض ہے سوا اُن کے جن کو رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے مستثنی فرمادیا، مشکوٰۃ شریف صفحہ۱۱۳ باب وجوب الجمعہ میں طارق ابن شہاب سے مرفوعاً روایت ہے کہ فرمایا رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے کہ جمعہ حق ہے اور واجب ہے مگر چار پر ، غلام اورعورت اور نابالغ اور بیمار، یعنی ان چار کے سوا سب پر واجب ہے ،خود کسی کا نوکر ہو یا سودا گر یا کھیتی والا یا مزدورہو، بعض روایت میں مسافر کا بھی ذکر ہے، اور اسی کتاب کے اُسی صفحہ میں عبداﷲ بن عمر رضی اﷲ تعالٰی  عنہما سے مرفوعا روایت ہے فرمایا رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے کہ باز آئیں لوگ جمعہ کا ناغہ کرنے سے ورنہ اﷲ تعالٰی  ان کے دلوں پر مہر لگا دے گا پھر وہ منافقوں میں سے ہوجائیں گے یعنی ان کا نام منافقوں کے دفتر میں لکھا جائے گا، ہاں اتنی قید اور شرط تو حدیث میں آئی ہے کہ جماعت کے ساتھ پڑھو، سوجماعت کا مسئلہ یہ ہے کہ جب ایک سے زیادہ ہوئے خواہ دو ہوں یا زیادہ ان کو جماعت کہتے ہیں، چنانچہ مشکوٰۃ شریف باب الجماعۃ وفضلہا ف۳ابو موسٰی  اشعری سے مرفوعا روایت ہے اور مشکوٰۃ شریف کے باب الجمعہ میں روایت ہے کہ حضرت رسو ل اﷲ صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے فرمایا ہے: جو شخص تین جمعے بلا ضرورت نہ پڑھے تو لکھا جاتا ہے منافق اس کتاب میں جو نہ مٹتی ہے نہ بدلتی ہے، لہذا نمازِ جمعہ ہر جگہ پڑھنا چاہئے خواہ شہر ہو یا گاؤں ہو یا جنگل ہو یا بَن ہو کیونکہ حدیث شریف میں کوئی خصوصیت نہیں آتی ہے۔ فقط حررہ محمد اشرف خاں عفی عنہ۔

الجواب

جمعہ بَن میں حرام ہے اور گاؤں میں ناجائز ہے اور عمومات اپنے شروط سے مشروط ہوتے ہیں، احادیث سے جو جاہلانہ استناد کسی جاہل نے کیا ہے وہ اگر دامنِ ائمہ چھوڑے تو یہی بتائے کہ یہ حدیثیں اس نے شروع میں کیونکر حجت قراردیں، اﷲ تعالٰی  نے سورہ جمعہ میںیا یھاالذین اٰمنوا ۱؎

 ( اے ایمان والو) مطلق ارشاد فرمایا ہے

(۱؎ القرآن   ۶۲/۹)

اس میں عورت یا بچے یا غلام یا مریض یا مسافر کسی کا استثنا نہیں تو کیوں نہیں کہتا کہ چار برس کے بچے پر بھی جمعہ فرض ہے وہ احادیث سب خبر آحاد ہیں اور خبرِ احاد موجب ظن، تو ان سے استدلال کرنا اس کو حرام اور قرآن مجید کے خلاف ہے۔اﷲ تعالٰی  فرماتا ہے :ان یتبعون الا الظن ۲؎( وہ نہیں اتباع کرتے مگر طن کی ۔ ت)

 (۲؎ القرآن        ۱۰/۶۶ )

اور فرماتا ہے :ان الظن لایغنی من الحق شیئا ۱؎ ( بلا شبہہ ظن حق سے بے نیاز نہیں کرسکتا ۔ت)

 (۱؎ القرآن  ۱۰/ ۳۶)

تو ان پر عمل خصوصاً عموم قرآن مجید کے خلاف کیونکر اس نے حلال کرلیا ،اور یہ بھی اس وقت ہے کہ ان احادیث آحاد کی صحت ثابت کرلے، ائمہ مجتہدین کا اجتہاد نہ ماننا اور بخاری و مسلم کی تصحیح یا نسائی و دارقطنی کی تعدیل وتخریج پر اعتماد کر نا ظلم شدید وجہل بعید ہے، کون سی آیت یا حدیث میں آیا ہے کہ بخاری جس حدیث کو صحیح کہہ دیں اسے مانو اور جسے ضعیف کہہ دیں اسے نہ مانو  يا یحٰی  وشعبہ جسے ثقہ کہہ دیں اسے معتمد  جانو اور ضعیف کہہ دیں تو ضعیف جانو، قرآن و حدیث متواترہ اجماع امت کو حجت بتاتے ہیں، اور اجماع امت ہے کہ جمعہ کا حکم مطلق وعام نہیں مقید بقیود مشروط بشرائط ہے اور جو اجماع کا خلاف کرتا ہے قرآن عظیم فرماتا ہے:نصلہ جھنم وساءت مصیرا o ۲؎

ہم اسے جہنم میں ڈالیں گے وہ بہت بری پھرنے کی جگہ ، واﷲ تعالٰی  اعلم

(۲؎ القرآن       ۴/۱۱۵)


Navigate through the articles
Previous article جمعہ کے بارے امام اعظم و صاحبین کے اقوال جمعۃ الوداع کے خطبۃ الوداع سے متعلق سوالات Next article
Rating 2.68/5
Rating: 2.7/5 (228 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu