• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Juma & Eid Prayer / جمعہ و عیدین > جمعۃ الوداع کے خطبۃ الوداع سے متعلق سوالات

جمعۃ الوداع کے خطبۃ الوداع سے متعلق سوالات

Published by Admin2 on 2013/11/22 (1156 reads)

New Page 1

مسئلہ۱۳۷۲تا۱۳۷۶: مسئولہ مکرم احمد اﷲ صاحب صدر بازار ہردوئی

کیا فرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین مسائل ذیل میں :

(۱) جمعہ الوداع رمضان المبارک کو نبی کریم احمد مجتبٰی  محمد مصطفی صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے خطبۃ الوداع پڑھا ہے یانہیں؟

(۲) اگرحضور محمد رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم نے نہیں پڑھا ہے تو سب سے پہلے خطبہ الوداع کس نے پڑھا ہے اور اس کا موجد ومخترع کون ہے صحابہ کرام رضوان اﷲ علیہم اجمعین یا ائمہ مجتہدین فقہاء ومحدثین رحمہم اﷲ تعالٰی ۔

(۳) شریعت مقدسہ مطہرہ منورہ محمدیہ حنفیہ اہلسنت وجماعت میں خطبہ الوداع کا کیا درجہ ہے فرض، واجب، سنت ، مستحب ، مباح؟ صاف صاف مدلل تحریر فرمائیں ۔

(۴) جس جمعہ الوداع کو خطبہ الوداع نہ پڑھا جائے وہ جمعہ صحیح ہوگا یا نہیں ؟ اور تارک خطبۃ الوداع کس درجہ کا خاطی وگنہگار ہے، قابل ملامت وزجر ہے یا نہیں؟ ملامت وزجر کرنے والے توگنہگار نہ ہوں گے؟ امامت اس کی جائز ہے یا نا جائز؟

(۵) کتاب شبیہ الانسان کے ص ۲۴۴ میں لکھا ہے :

اما خواند کلماتِ حسرت وافسوس درخطبہء آخر رمضان مباح است فاما ازسلف منقول نیست وافضل ترک ست تا عوام راگمان وجوب و سنتش نگردد دریں شرط ست کہ روایت دروغ وبہتان برسول مقبول صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم دراں نباشد والاحرام ہمچنانکہ این ست ؎

رمضان کے آخری جمعہ میں حسرت وافسوس کے کلمات پڑھنا مباح ہے لیکن اسلاف سے منقول نہیں، ترک افضل ہے تاکہ عوام اسے واجب یاسنت نہ بنالیں، شرط یہ ہے کہ اس میں رسالتمآب صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم کی نسبت جھوٹ شامل نہ ہو ورنہ حرام ہے اور وہ یہ ہے

اکثر محمد مصطفی محبوب ومطلوبِ خدا                                 گفتے دریں حسرتا ای ماہ رمضان الوداع

                               خدا کے محبوب ومطلوب محمد عربی صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم

                             حسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہتے اے ماہِ رمضان ! الوداع۔ (ت)

یہ فتوٰی  مفتی سعد اﷲ نامی کسی بزرگ کا ہے جو۱۲۹۶ھ میں مطبع نولکشور کا نپور میں چھپا ہے جناب اس فتوٰی  کے متعلق کیا فرماتے ہیں آیا صحیح قابلِ عمل ہے یا واجب الرد؟ جو کچھ ہو صاف تحریر فرمائے، بینوا توجروا

الجواب

(۱) الوداع جس طرح رائج ہے حضور اقدس صلی اﷲ تعالٰی  علیہ وسلم سے ثابت نہیں۔

(۲) نہ صحابہ کرام ومجتہدین عظام رضی اﷲ تعالٰی  عنہم سے نہ اس کا موجد معلوم،

(۳) وہ اپنی حد ذات میں مباح ہے ہر مباح نیتِ حسن سے مستحب ہوجاتا ہے اور عروض وعوارض خلاف سے مکروہ سے حرام تک۔

(۴) جمعہ کے لئے خطبہ شرط ہے خاص خطبہ الوداع کوئی چیز نہیں ان کے ترک سے نماز پر کچھ اثر نہیں پڑسکتا اس کے ترک میں کچھ خلل نہیں، نہ تارک پر نہ زجروملامت روا جبکہ ترک بر بنائے وہابیت نہ ہو، ہاں اگر وہابیت ہے تو وہابی کے پیچھے نماز بیشک ناجائز محض باطل اور وہ زجر و ملامت سے بھی سخت ترکا مستحق ہے۔

(۵) اس فتوے میں جو کچھ لکھا حرف بحرف صحیح ہے سوائے اس لفظ کے کہ '' افضل ترک است'' اس کی جگہ یوں چاہئے  التزامش نہ شاید گا ہے ترک ہم کنند تا عوام گمان وجوب وامتنان ؟ (اس کا الترام نہیں کرنا چاہئے کبھی اسے ترک کردیں تاکہ عوام کو وجوب یا سنت ہونے کا وہم نہ ہو، ت)

فقد صرح العلماء الکرام ان الترک احیانا یزیل الایھام( علماء کرام نے تصریح کی ہے کہ بعض اوقات ترک کردینا عوام کے وہم کو زائل کردیتا ہے ۔ت) واللہ سبحٰنہ وتعالٰی  اعلم


Navigate through the articles
Previous article خطبہء جمعہ کے دوران سنتیں پڑھنا کیسا؟ جمعہ کے پہلے خطبہ کی بجائے وعظ و نصیحت کرنا کیسا؟ Next article
Rating 2.73/5
Rating: 2.7/5 (249 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu