• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Juma & Eid Prayer / جمعہ و عیدین > عیدگاہ مثل مساجد قابل حرمت و وقعت ہے یانہیں؟

عیدگاہ مثل مساجد قابل حرمت و وقعت ہے یانہیں؟

Published by Admin2 on 2013/12/2 (814 reads)

New Page 1

مسئلہ۱۴۴۷: از شہر بریلی محلہ ملوکپور  مسئولہ منشی ہدایت یا رخاں صاحب قیس ۸  محرم الحرام۱۳۳۹ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ عیدگاہ مثل مساجد قابل حرمت  و  وقعت ہے یانہیں؟ اس کا حکم حکمِ مسجد ہے یا نہیں؟ اس احاطہ کے اند رغیر قومیں جوتے پہنے ہوئے جاسکتی ہے یا نہیں؟ا ور اس چاردیواری کے اندر خرید وفروخت ہوسکتی ہے ؟ خطبہ کے وقت دکانداروں یا خوانچہ  والوں کا گشت اس میں جائز  ہوسکتا ہے  یانہیں؟  بالتشریع اس کا جواب مرحمت فرمایا جائے۔

الجواب

عیدگاہ ایک زمین ہے کہ مسلمانوں نے نمازِ عید کے لئے خاص کی، امام تاج الشریعۃ نے فرمایا صحیح یہ ہے

کہ وہ مسجد ہے اس پر تمام احکام احکام مسجد ہیں نہایہ میں اگر چہ مختار للفتوٰی یہ رکھا کہ وہ عین مسجد نہیں، مگر اس کے یہ معنی نہیں ہوسکتے کہ اس کی تنظیف وتطہیر ضروری نہیں ، غیر  وقت نماز  و خطبہ میں اس میں خرید وفروخت قولِ اول پر مطلقاً حرام ہے اور خرید فروخت کے لئے اس متعین کرنا بالاتفاق حرام ہے۔

اذ لا یجوز  تغییر الوقف عن ھیأتہ فضلا عن ضیعتہ کما فی الھندیۃ وغیرھا ۱؎ ۔

وقف کی ہیئت وحالت میں تبدیلی جائز نہیں چہ جائیکہ اسے ضائع کرنا جائز ہو  ہندیہ وغیرہ ۔ (ت)

 (۱؎ فتاوٰی ہندیہ      کتاب الوقف     الباب الرابع عشرفی المتفرقات   مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور   ۲/ ۴۹۰)

اور  یوں کہ اتفاقاً غیر  وقت نماز خطبہ میں ایک کے پاس کوئی شے ہو وہ دوسرے کے ہاتھ بیع کرے، قول دوم  پر اس میں حرج نہیں، وقت نماز یا خطبہ میں خوانچہ والوں کا گشت بلا شبہ ممنوع و واجب الانسداد ہے کہ مخل استماع وناقض ہے اور ان کے غیر اوقات میں وہی اختلاف قولین، یونہی کفار کی آمد و رفت خصوصاً جوتا پہنے کہ یہ نجاست سے خالی نہیں ہوتے نہ وہ جنابت سے

کما حققہ فی الحلیۃ و بیناہ فی فتاوٰنا( جیساکہ اس کی تحقیق حلیہ میں ہے اور ہم نے اپنے فتاوی میں اسے تفصیلاً بیان کیا ہے ۔ت)

درمختار میں ہے:اماالمتخذ لصلٰوۃ جنازۃ اوعید فھو مسجد فی حق جوا زالاقتداء  وان انفصل الصفوف رفقا بالناس لا فی حق غیرہ بہ یفتی نھایۃ ۲؎ ۔

لوگوں کی سہولت کی وجہ سے عیدگاہ او رجنازہ گاہ جواز اقتداء کے حق میں مسجد ہے اگر چہ صفیں متصل نہ ہوں، ہا ں اس کے علاوہ میں یہ حکم نہیں، اسی پر فتوٰی ہے ۔ نہایہ ۔(ت)

(۲؎ درمختار                باب مایفسد  الصلوٰۃ وما یکرہ فیہا    مطبوعہ   مطبع مجتبائی دہلی       ۱/ ۹۳)

ردالمحتار میں ہے:قال فی البحر ظاھرہ انہ یجوز الوطئ والبول والتخلی فیہ ولا یخفی مافیہ فان البانی لم یعدہ لذلک فینبغی ان لایجوز  وان حکمنا بکونہ غیر مسجد وانما تظھر فائدتہ فی حق بقیۃ الاحکام و حل دخولہ للجنب والحائض ۳؎  انتھی

بحر میں ظاہر عبارت بتا رہی ہے کہ وطی اور بول وبراز جائز ہے لیکن یہ واضح رہنا چاہئے کہ بانی نے اس کے لئے نہیں بنائی لہذایہ جائز نہیں ہونا چاہیے اگر چہ ہم اسے مسجد کا حکم نہیں دیتے اس کا فائدہ بقیہ احکام میں ظاہر ہوتا ہے اور اس میں جنبی اور حائضہ کے دخول کا جواز بھی انتہی (ت)

(۳؎ ردالمحتار             باب مایفسد  الصلوٰۃ وما یکرہ فیہا   مصطفی البابی مصر       ۱/ ۴۸۶)

اسی میں ہے:صحح تاج الشریعۃ ان مصلی العید لہ حکم المساجد ۱؎ ۔ واﷲ تعالٰی اعلم

تاج الشریعۃ نے عید گاہ کے لئے مسجدکے حکم کی تصحیح کی ہے ۔(ت) واﷲ تعالٰی اعلم

(۱؎ ردالمحتار    باب مایفسد الصلوٰۃ وما یکرہ فیہا    مطبوعہ مصطفی البابی مصر    ۱/۴۸۶)


Navigate through the articles
Previous article خطبوں کے درمیان ہاتھ اٹھا کر دعا مانگنے کا حکم
Rating 2.83/5
Rating: 2.8/5 (226 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu