• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Death / Funeral / Graves / موت / جنازہ / قبر > بعد جنازہ فاتحہ و سورہ اخلاص کا ثبوت

بعد جنازہ فاتحہ و سورہ اخلاص کا ثبوت

Published by Admin2 on 2014/5/21 (949 reads)

New Page 1

مسئلہ نمبر ۶۵:  ازجالندھر محلہ راستہ دروازہ     بھگواڑہ ۔    مرسلہ محمد احمد خاں صاحب   ۶  رمضان المبارک ۱۳۲۳ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں، پنجاب کے اکثر شہروں میں دستور ہے کہ نمازِ جنازہ سے فارغ ہوکر بعد سلام کے اُسی جگہ جہاں نمازِ جنازہ ادا کی گئی ہے میّت کے لئے دعائے مغفرت کی جاتی ہے اور بعض لوگ پیشتر دُعا کے سورہ فاتحہ ایک بار سورہ اخلاص تین باریاگیارہ دفعہ پڑھکر میّت کے لئے مغفرت کی دعاکرتے ہیں،اور ہمیشہ سے یہی دستور چلا آیا اب فرقہ غیرمقلدین اس دستور کے ہٹانے میں کوشش کر رہے ہیں، اس کے عدمِ جواز میں غیر مقلدین یہ دلیل پیش کرتے ہیں کہ اس کاثبوت کسی حدیث سے نہیں بلکہ فقہ کی کتابوں کی عبارتیں سناتے ہیں، منجملہ ان کے مستندات  کے ایک یہ ہے :اذافرغ من الصلٰوۃ لایقوم بالدعاء  ۱؎ سراجیہ،قدوری کے حاشیہ پر ہے :الدعا بعدصلاۃ الجنازۃ مکروہ ۲؎ کذا فی البرجندی لایقوم بالدعاء بعدصلاۃ الجنائز لانہ دعا مرۃ لان اکثرھا دعاء ۳؎۔جب نماز جنازہ سے فارغ ہوجائے تو دعا کے لئے  نہ کھڑا ہو۔ (ت) بزازیہ جلد اول برحاشیہ عالمگیری دعا بعد نماز جنازہ مکروہ ہے۔ جیساکہ برجندی میں ہے نماز جنازہ کے بعد دعاکے لئے کھڑا نہ ہو کہ ایک مرتبہ دُعا کرچکا ہے کیونکہ نمازِ جنازہ کا اکثر حصّہ دعا ہی ہے۔(ت)جواب مدلّل بدلائل بحوالہ کتب معتبرہ اور تحریر عبارات معتمدہ تحریرفرماکر ممنون  و مشکور فرمائیں۔بینوابالدیل والتفصیل توجرابالاجرالجزیل

 (۱؎ فتاوی سراجیہ    باب الصلٰوۃ علی الجنازۃ    مطبوعہ منشی نولکشور لکھنؤ        ص۲۳)

(۲؎ برجندی شرح نقایہ        فصل فی صلٰوۃ الجنازہ    مطبوعہ منشی نولکشور لکھنؤ      ۱ /۱۸۰)

(۳؎ فتاوٰی بزازیہ علی ہامش فتاوٰی ہندیۃ    الخامس والعشرون فی الجنائز الخ    نورانی کتب خانہ پشاور  ۴ /۸۰)

الجواب:

گیارہ ۱۱سال ہوئے یہ مسئلہ ۱۳۱۱ھ میں معرکۃ الآراء رہا،بمبئی وکانپور سے اس کے بارہ میں بار بار سوالات مختلف صورتوں میں آئے فقیر نے جواب کبھی تحقیقِ حدیث اور کبھی تنقیحِ فقہ سے کام لیا اور بالآخر اس کے باب میں ایک موجز وکافی رسالہمسمّی بہ بذل الجوائز علی الدعاء بعدصلاۃ الجنائزلکھا جس میں تحقیق حکم فقہی وتوضیح معانی عبارات مذکورہ سراجیہ وغیرہا کتب فقہ کوبعونہٖ عزوجل ذروہ عُلیا تک پہنچایا اور بفضلہ تعالٰی عرش تحقیق مسقر کر دکھایا کہ میّت کے لئے دعا قبل نمازِ جنازہ وبعد نمازجنازہ ہمیشہ مطلقاً مستحب ومندوب ہے ۔اور اس سے اصلاً ممانعت نہیں۔خودحضور پُرنور سید عالم صلی اﷲتعالٰی علیہ وسلم و صحابہ کرام رضوان اﷲتعالٰی علیہم اجمعین سے قبل وبعد نماز دونوں وقت میّت کے لئے دعا فرمانا اوراس کا حکم دینا ثابت ہے،فقہائے کرام ہرگز  اسے منع نہیں فرماتے، یہاں ممانعت تحریمی خواہ تنزیہی صرف  دو۲ صورتوں کے لئے ہے اور وہی عبارات مذکورہ وغیر مذکورہ فقیہہ میں علی التنوع مقصود ہیں۔ ایک یہ کہ خاص دعاطویل کی غرض سے بعد نماز خواہ قبل نماز تجہیز میّت کو تعویق میں ڈالنا، مثلاً نماز ہوچکی اور کوئی حالت منتظرہ لے چلنے کے لئے باقی نہیں رہی، صرف دعا کے لئے جنازہ رکھ چھوڑیں اور درنگ وتطویل کریں یہ ممنوع ہے،اکثر عبارات اُسی طرف ناظر ہیں،دوسرے یہ کہ بعد نماز اُسی ہیئت پر بدستور صفیں باندھے امام  و مقتدی وہیں کھڑے دُعاکریں یہ نامناسب ہے کہ نماز  پر شبہہِ زیادت نہ ہو۔ بعض عبارات اُسی طرف ناظر ہیں، ان کے سوا تمام صور جن میں نہ خاص دُعاء کی غرض سے درنگ وتعویق کریں نہ بعد نماز اُسی انداز میں ہو بلکہ صفیں توڑ کر دعاءِ قلیل یا بوجہ دیگر جنازہ میں دیر کی حالت میں دعاء طویل اصلا مضائقہ نہیں رکھتے، نہ کلماتِ علماء میں اس کا انکار ،بلکہ وہ عام مامور بہ کے حکم میں داخل اور مستحب شرعی کا فرد ہے۔ یہ رسالہ بمبئی مطبع گلزار حسینی میں چھپ کر شائع ہوچکا۔ ان تمام مراتب کی تفصیل تام اُسی رسالہ اور اُس کے پہلے  کے فتوٰی میں ملے گی۔

کشف الغطاء میں بعد ذکر عبارات قنیہ وغیرہا فرمایا:فاتحہ و دعابرائے میت  پیش ازدفن درست است  وہمیں است روایت معمولہ، کذا فی الخلاصۃالفقہ ۱؎۔ واﷲ تعالٰی اعلممیت کے لئے دفن سے قبل فاتحہ ودعا درست ہے اوریہی روایت معمول بھا ہے۔ایسا ہی خلاصۃ الفقہ میں ہے(ت) واﷲ تعالٰی اعلم

 (۱؂ کشف الغطاء   فصل ششم نماز جنازہ   مطبع احمدی دہلی ص۴۰)


Navigate through the articles
Previous article جنازہ کے ساتھ نعتیہ غزلیں پڑھنے کا حکم جنازہ مسجد کے اندر پڑھنے کا حکم Next article
Rating 2.79/5
Rating: 2.8/5 (231 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu