• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Death / Funeral / Graves / موت / جنازہ / قبر > بعد دفن میت کے گھر آکر فاتحہ پڑھنا کیسا ہے؟

بعد دفن میت کے گھر آکر فاتحہ پڑھنا کیسا ہے؟

Published by Admin2 on 2014/9/10 (1561 reads)
Page:
(1) 2 3 »

New Page 1

مسئلہ ۱۱۰: لوگوں میں رسل ہے کہ میّت کو دفن کرکے اس کے مکان میں آتے ہیں او رکہتے ہیں فاتحہ پڑھ لو، پھر کچھ پڑھتے ہیں او ر ہاتھ اٹھاتے ہیں، یہ فعل کیسا ہے ؟ بینو توجروا

  الجواب

اصل اس فعل میں کوئی   حرج  نہیں کہ ایصال ثواب سے اموات کی اعانت اور ان کےلئے دعائے مغفرت اور  پسماندوں کو تسکین وتعزیت سب باتیں شرعاً محمود و روا۔فقد روی الترمذی عن النبی صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم عن عزی مصابا فلہ مثل الجرہ ۱؎ و ایضاترمذی کی روایت نبی کریم صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم سے ہے: جو کسی مصیبت زدہ کی تعزیت کرے تو  اسے بھی اسی کی طرح اجر ملے۔

(۱؂جامع الترمذی    ابواب الجنائز      کتب خانہ رشیدیہ دہلی        ۱/ ۱۲۷)

عنہ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم من عزی ثکلے کسی بردا فی الجنۃ  ۲؎امام ترمذی ہی کی دوسری روایت حضور اقدس صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم سے یہ ہے: جو مرگِ فرزندکی مصیبت زدہ کسی عورت کو تعزیت کرے اسے جنت میں عمدہ چادر  پہنائی جائے،

 (۲ جامع الترمذی    ابواب الجنائز     کتب خانہ رشیدیہ دہلی        ۱/ ۱۲۷)

وابن ماجۃ والبیھقی باسناد حسن قال صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم مامن مومن یعزی اخاہ بمصیبۃ الاکساہ اﷲ تعالٰی من حلل الکرامۃ یوم القٰیمۃ ۳ ؎ ۔ابن ماجہ او ربہیقی نے بسند حسن روایت کی رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم فرماتے ہیں: جو مومن بھی کسی مصیبت پر اپنے بھائی کی تعزیت کرے خدا تعالٰی اسے قیامت کے دن عزت  و کرامت کا لباس پہنائے گا (ت)

 (۳؎ سنن ابن ماجہ    باب ماجاء فی ثواب من عزی مصاباً    ایچ ایم سعید کمپنی کراچی    ص ۱۱۶)

علامہ ابن الحاج حلیہ میں فرماتے ہیں :التعزیۃ مستحب قد ندب الیہ الشارع فی غیرماحدیث ومن ذلک ماروی ابن ماجۃ  والبیھقی باسناد حسن الٰی ان قال وحسن ان یقرن مع الدعاء لہ بجزیل الثواب علی مصابہ لمیّتہ بالرحمۃ والمغفرۃ و قد نبھنا الشارع صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم علٰی ھذا المقصود فی غیرما حدیث  ۴؎ الخ اھ ملخصا۔تعزیت مستحب ہے شارع علیہ السلام نے متعدد حدیثوں میں اس کی ترغیب دی ہے، ان میں سے ایک حدیث ہو ہے جسے ابن ماجہ  وبہیقی نے بسندِ حسن روایت کیا (حدیث مذکور پیش کرنے کے بعد فرمایا) او ر اچھا یہ ہے کہ مصیبت زدہ کے لئے عظیم ثواب کی دعا کرنے کے ساتھ اس کے مردے کیلئے رحمت ومغفرت کی دعا بھی کرے۔ اس خاص مقصد پر بھی شارع علیہ السلام نے متعدد حدیثوں میں ہمیں متنبہ اور خبردار کیا ہے الخ اھ تلخیص (ت)

 (۴؎ حلیۃ المحلی شرح منیۃ المصلی    )

اور میاں اسحٰق صاحب دہلوی کو تسلیم ہے کہ ہاتھ اٹھانا مطلقاً دعا کے آداب سے ہے۔ توا س وقت بھی کچھ مضائقہ نہیں رکھتا ۔

اربعین میں ہے :مسئلہ ۳۲:  درتعزیت میّت رفتن وہردودست برداشتہ سورہ فاتحہ خواند جائزاست یا نہ؟

جواب: رفتن برائے تعزیت میّت جائز است و دعائے مغفرت برائے اونمودن مستحب است وہمچنین دعائے خیر  برئے اہل میّت اما دست برداشتن برائے دعا وقت تعزیت ظاہراً جواز است زیرا کہ درحدیث شریف رفع یدین در دعا مطلقاً ثابت شدہ پس دریں وقت ہم مضائقہ نہ دار دلیکن تخصیص آں برائے دعا وقت تعزیت ماثور نیست ۱؎ انتہی ملخصا۔

Page:
(1) 2 3 »

Navigate through the articles
Previous article میونسپلٹی زبردستی زمین لےکرمردے دفن کروائےتو مسجد کے اندر قبور اور صحن کا مسئلہ Next article
Rating 2.86/5
Rating: 2.9/5 (261 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu