• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Death / Funeral / Graves / موت / جنازہ / قبر > قبر کے نزدیک تلاوت کا کیا حکم ہے؟

قبر کے نزدیک تلاوت کا کیا حکم ہے؟

Published by Admin2 on 2014/9/30 (726 reads)

New Page 1

مسئلہ ۱۵۶ و ۱۵۷: از منجان مرسلہ علی محمد عیسٰی برادرز ۸ رمضان المبارک ۱۳۳۶ھ

(۱) قبرستان میں کلام شریف یا پنج سورہ قبر کے نزدیک بیٹھ کر تلاوت کرنا جائز ہے یا نہیں؟

(۲) قبر پر سبزی یا پھول یا اگر بتی رکھنا، جلانا جائز ہے یا نہیں؟ً

الجواب

(۱) قبر کے پاس تلاوت یاد پر خواہ دیکھ کر ہر طرح جائز ہے جبکہ لوجہ اﷲ ہو، اور قبر پر نہ بیٹھے، نہ کسی قبرپر پاؤں رکھ کر وہاں پہنچناہو، اور اگر بے اس کے وہاں تک نہ جاسکے تو قبرکے نزدیک تلاوت کے لیے جانا حرام ہے، بلکہ کنارے ہی سے جہاں تک بے کسی قبر کو روندے جاسکتا ہے، تلاوت کرے،

درمختارمیں ہے :یکرہ المشی فی طریق ظن انہ محدث حتی اذالم یصل الی قبرہ الابوطی قبر ترکہ لایکرہ الدفن لیلا ولااجلاس القارئین عند القبر وھو المختار۱؎۔ واﷲ تعالٰی اعلمقبرستان کے اندر ایسے راستے پر چلنا ممنوع ہے جس کے بارے میں گمان ہو کہ وہ نیا بنالیا گیاہے یہا ں تک کہ جب اپنی میّت کی قبر تک کسی دوسری قبرکو پامال کئے بغیر نہ پہنچ سکتا ہوتو وہاں تک جانا ترک کرے۔ رات کو دفن کرنا اور قبر کے پاس تلاوت کرنے والوں کو بٹھانا مکروہ نہیں،یہی مختار ہے۔ واﷲ تعالٰی اعلم (ت)

 (۱؎ در مختار   باب صلٰوۃ الجنائز    مطبع مجتبائی دہلی        ۱/ ۱۲۶)

قبر پر سبزی پھول ڈالنا اچھا ہے۔ عٰلمگیری میں ہے :وضع الورد والریاحین علی القبور حسن ۲؎ ۔      قبروں پر گلاب وغیرہ کے پھول رکھنا اچھا ہے (ت)

 (۲؎ فتاوٰی ہندیہ    الباب السادس عشر فی زیارۃ القبور الخ    نورانی کتب خانہ پشاور    ۵/ ۳۳۱)

ردالمحتار میں ہے:یؤخذ من ذلک ( ای من انہ مادام رطبا یسبح اﷲ تعالٰی فیونس المیّت وتنزل بذکرہ الرحمۃ) ومن الحدیث ند با وضع ذلک للاتباع ویقاس علیہ مااعتید فی زماننا من وضع اغصان الآس ونحوہ ۳؎ ۔پھول جب تک تر رہتا ہے اﷲ تعالٰی کی تسبیح کرکے میّت کا دل بہلاتا ہے، اور خدا کے ذکر سے رحمت نازل ہوتی ہے۔ ا س بات سے اور حدیث پاک کے اتباع کے لحاظ سے اس کا مندوب ہونا اخذ ہوتاہے ۔ اسی پر قیاس بھی ہوگا جو ہمارے زمانے میں آس وغیر کی شاخیں رکھنے کا دستور ہے ۔(ت)

 (۳؎ ردالمحتاار    مطلب وضع الجدید ونحوالآس علی القبور    ادارۃالطباعۃ المصریہ مصر    ۱/ ۶۰۷)

اگر بتی قبر کے اوپر رکھ کر نہ جلائی جائے کہ اس میں سوءِ ادب اور بدفالی ہے۔ عٰلمگیری میں ہے:ان سقف القبرحق المیّت۴؎ (قبرکی چھت حقِ میّت ہے ۔ت) ہاں قریب قبر زمین خالی پر رکھ کر سلگائیں کہ خوشبومحبوب ہے ۔ واﷲ تعالٰی اعلم۔

 (۴؎ فتاوٰی ہندیۃ    الباب السادس عشر فی زیارۃ القبور الخ    نورانی کتب خانہ پشاور    ۵/ ۳۵۱)


Navigate through the articles
Previous article مسجد کے اندر قبور اور صحن کا مسئلہ مزارات پر فاتحہ وغیرہ کے مسائل Next article
Rating 2.72/5
Rating: 2.7/5 (219 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu