• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Timing of Prayers / اوقات نماز > وقت مستحب ظہر کا گرما میں کیا ہے

وقت مستحب ظہر کا گرما میں کیا ہے

Published by Admin2 on 2012/5/30 (1669 reads)
Page:
(1) 2 »

New Page 1

مسئلہ (۳۱۶) کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ وقت مستحب ظہر کا گرما میں کیا ہے اور جو شخص موسم مذکور میں بعد زوال اوّل وقت نمازِ ظہر پڑھے اور لوگوں کو بھی تاکید کرے کہ وقت اولٰی یہی ہے، آیا وہ شخص حق پر ہے یا ناحق پر، بینوا توجروا۔

الجواب: موسم گرما میں ظہر کا ابراد کرکے پڑھنا مستحب ہے تمام کتب حنفیہ میں یہ معنی مصرح ہے اور اوّل وقت میں پڑھنا رسول اللہ صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم کے حکمِ اقدس سے عدول۔ حضور فرماتے ہیں:

اذا اشتد الحر فابردوا بالظھر، فان شدّۃ الحرّ من فیح جھنم ۲۔ متفق علیہ۔جب گرمی سخت ہوتو ظہر کو ٹھنڈا کروکہ شدّتِ گرمی وسعت دم دوزخ سے ہے۔

(۲؎ صحیح لمسلم  استحباب الابراد بالظہر فی شدۃ الحر الخ    مطبوعہ قدیمی کتب خانہ اصح المطابع کراچی ۱/۲۲۴)

اور بخاری ونسائی انس رضی اللہ تعالٰی عنہ سے راوی واللفظ للنسائی قال:کان رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ تعالٰی علیہ وسلم اذاکان الحرابرد الصلاۃ واذاکان البرد عجل ۳۔رسول اللہ صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم جب گرمی ہو تی تو نماز ٹھنڈی کرتے اور جب سردی ہوتی تعجیل فرماتے۔

(۳؎ سنن النسائی    تعجیل الظہر فے البرد   مطبوعہ مکتبہ سلفیہ لاہور        ۱/۵۸)

اور بخاری مسلم ابوداود ابن ماجہ نے سیدنا ابی ذر رضی اللہ تعالٰی عنہ سے روایت کی، قال:اذن مؤذن النبی صلی اللّٰہ تعالٰی علیہ وسلم الظہریعنی مؤذنِ نبی صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم نے اذانِ ظہر دی،

،فقال:ابرد،ابرد،اوقال:انتظر،انتظر،وقال:شدّۃالحرّمن فیح جہنّم،فاذااشتدالحر فا بردواعن الصلاۃ۔ حتی رأینا فیئ التلول ۱۔رسول اللہ صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ٹھنڈا کر، ٹھنڈا کر، یا فرمایا: انتظار کر، انتظار کر، اور فرمایا، سختی گرما جہنم کی وسعت نفس سے ہے تو جب گرمی زائد ہو نماز ٹھنڈی کرو،یہاں تک کہ ہم نے دیکھا ٹیلوں کا سایہ۔

 (۱؎ سنن ابی داود    وقت صلوٰۃ الظہر    آفتاب عالم پریس لاہور    ۱/۵۸)

دوسرے طریق میں ہے:کنامع النبی صلی اللّٰہ تعالٰی علیہ وسلم فی السفرفارادالمؤذن ان یؤذن الظھر فقال النبی صلی اللّٰہ تعالٰی علیہ وسلم ابرد ثم اراد ان یؤذن فقال لہ ابرد حتی رأینا فیئ التلول ۲؎ الحدیث۔ہم نبی صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم کے ساتھ سفر میں تھے مؤذن نے اذان کا ارادہ کیا کہ ظہر کی اذان دے حضور اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا: ٹھنڈاکر پھر چاہا کہ اذان دے پھر فرمایا: ٹھنڈا کر، یہاں تک کہ ہم نے ٹیلوں کے سائے دیکھے۔

(۲ سنن ابی داود    وقت صلوٰۃ الظہر    آفتاب عالم پریس لاہور    ۱/۵۸)

اور مسلم میں ابراہیم کے طریق میں شعبہ سے مؤذن کا تین بار ارادہ اور حضور کا یہی حکم فرمانا وارد ہوا قلت ومسلم ثقۃ فزیادتہ مقبولۃ (میں نے کہا مسلم ثقہ ہے اس لئے اس کا اضافہ مقبول ہے

اقول: اب یہاں سے مبالغہ تاخیر کا اندازہ کرنا چاہئے کہ مؤذن نے تین بار اذان کا ارادہ کیا اور ہر دفعہ ابراد کا حکم ہوا اور یقینا معلوم ہے کہ ہر دوا ارادوں میں اس قدر فاصلہ ضرور تھا جس کو ابراد کہہ سکییں اور وہ وقت بہ نسبت پہلے وقت کے ٹھنڈا ہو ورنہ لازم آئے کہ سیدنا بلال رضی اللہ تعالٰی عنہ نے تعمیلِ حکم نہ کی اور جب اذان میں یہ تاخیر ہوئی تو نماز تو اور بھی دیر میں ہوئی ہوگی۔ علما فرماتے ہیں ٹیلے غالباً بسیط اور پھیلے ہوئے ہوتے ہیں کہ اُن کا سایہ دوپہر کے بہت دیر بعد ظاہر ہوتابخلاف اشیائے مستطیلہ مانند منار ودیوار وغیرہما،امام ہمام احمد بن محمد خطیب قسطلانی ارشاد الساری شرح صحیح بخاری میں فرماتے ہیں: ٹیلوں کا سایہ ظاہر نہیں ہوتا مگر جب اکثر وقت ظہر کا جاتا رہے ابوداؤد ونسائی حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ تعالٰی عنہ سے روایت کرتے ہیں

قال:کان قدر صلاۃ رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ تعالٰی علیہ وسلم الظھر فی الصیف، ثلثۃ اقدامالی خمسۃ اقدام ۱۔گرمی میں نماز حضور سرور عالم صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم کی مقدار تین قدم سے پانچ قدمتک تھے۔

(۱؎ سنن النسائی    باب الابراد بالظہر    مطبوعہ مکتبہ سلفیہ لاہور        ۱/۵۹)

Page:
(1) 2 »

Navigate through the articles
Previous article وقت فجرکب سے شروع ہوتا ہے اور کب تک رہتا ہے جاڑے میں جمعہ کاوقت کب تک ہے؟اورگرمیوں میں Next article
Rating 2.82/5
Rating: 2.8/5 (270 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu