• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Namaz / Salat / Prayer / نماز > کیا نماز کے بعد دعا بدعت ہے؟

کیا نماز کے بعد دعا بدعت ہے؟

Published by Admin2 on 2012/7/15 (2486 reads)
Page:
(1) 2 3 »

New Page 1

مسئلہ نمبر ۴۴۶   ازملک بنگالہ    ۱۹محرم الحرام ۱۳۱۱ھ

بسم اﷲ الرحمٰن الرحیم نحمدہ و بصلی علی رسولہ الکریم

چہ می فرمایند علمائے دین و مفتیانِ شرح متین اندریں مسئلہ کہ درملک بنگالہ یک گروہِ نوپیدا شدہ کہ آں راجہاں دومی گویندوایشاں یک شاخ غیر مقلدین اند لیکن ازاں طائفہ درچندامور زائد اندیکے اینکہ می گویند کہ بعد نماز مناجات خواستین درست نیست بلکہ نسبت بدعتش می کنند علم فقہ و اصول وغیرہ ایں قوم تسلیم نمی کنند بلکہ دشنام می دہند وفحش ناسزامی گویندومی کہ سید عالم صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم گاہے دعا نہ کردہ پس اگر ایشاں ازقرآن شریف و صحاح ستّہ استخراج مسائل کردہ فرستند نہایت خوب خواہد شد والسلام۔علمائے دین و مفتیان شرع متین کی اس بارے میں کیا رائے ہے کہ بنگالہ کے علاقے میں ایک نیا گروہ پیدا ہوا ہے جنھیں جہادو کہا جاتا ہے یہ غیر مقلدین کی ایک شاخ ہی ہے لیکن چند امور میں ان سے آگے بڑھ گئے ایک یہ کہتے ہیں کہ نماز کے بعد دُعا کرنا درست نہیں بلکہ بدعت ہے، یہ علمِ فقہ اور اصولِ فقہ وغیرہ کو تسلیم نہیں کرتے بلکہ اسے برا بھلا کہتے ہیں اور یہ کہتے ہیں کہ حضور صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم نے کبھی دعا نہیں کی اگر قرآن شریف وصحاح ستہ کے حوالے سے اس مسئلہ کے استخراج پر دلائل فراہم فرمائیں تو بہت خوب ہوگا۔والسلام

الجواب

بسم اﷲ الرحمٰن الرحیم

حمدالک اللھم یاعظیم صل علی نبیک الکریم واٰلہ وصحبہ اولی التکریم و مجتھدی دینہ القویم اٰمین الحمد ﷲسلسلہ سخن دراست و در فیض الہٰی باز خامہ اگر بتفصیل گراید ہماناں نامہ گرد آدردن باید لا جرم ایک آیت وہفت حدیث بسند ومی نماید آیہ قال اﷲ عزّوجلفاذافرغت فانصب الٰی ربک فارغب ۱؎۔

اے اﷲ! حمد تیری ہے، اے عظیم! اپنے کریم نبی پر رحمتیں نازل فرما ان کی صاحبِ شرف آل و اصحاب اور دینِ قویم کے مجتہدین پر بھی ،آمین ۔ الحمد ﷲ اگر اس پر تفصیلی گفتگو کی جائے تو اﷲ تعالٰی کے فضل وکرم سے بات بڑی طویل ہوگی، بہرحال اس سلسلہ میں یہاں ایک آیت اور سات احادیث مع سند ذکر کی جائیں گی آیۃ اﷲ تعالٰی کا ارشاد ہے : پس جب تم نماز سے فارغ ہو تو دعا میں محنت کرو اپنے ہی رب کی طرف رغبت کرو۔

 (۱؎ القرآن    ۹۴/ ۸)

قول ا صح در تفسیر آیۃ کریمہ قول سلطان المفسرین ا بن عم صلی اﷲ علیہ وسلم عبداﷲ بن عباس رضی اﷲ تعالٰی عنہما ست کہ فراغ فراغ از نماز و نصب نصب دردُعاست یعنی چوں ازنماز فارغ شوی در دعا جہد و مشقت نما و بسوئے پروردگار خودبزاری و تضرع گرا فی تفسیر الجلالین فاذا فرغت من الصلٰوۃ فانصب اتعب فی الدعاء والٰی ربک فارغب۱؎ ہمدرد خطبہ ادست ھذا فی تکملۃ الامام جلال الدین المحلی علی نمطہ من الاعتماد علی ارجع الاقوال و ترک التطویل بذکرالاقوال غیر مرضیۃ ۲؎۔ اھ ملخصاً ۔اس آیۃ کریمہ کی تفسیر میں راجح قول حضور صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کے چچا زاد حضرت عبداﷲ بن عباس رضی اﷲ تعالٰی عنہما کا ہے کہ فراغ فراغ نماز و نصب نصب در دعاست یعنی جب تم نماز سے فارغ ہوجاؤ تو دعا میں خوب محنت کرو اور بارگاہِ خداوندی میں آہ و زاری کے ساتھ رغبت کرو۔ جلالین کے خطبہ میں یہ بھی ہے کہ جلال الدین محلی کی تفسیر کا تکملہ انہی کے طریقہ پر ہے اور ان کا طریقہ یہ ہے کہ وُہ مختار و راجح پر اعتماد کرتے ہیں اور ایسے اقوال کا ذکر جو مختار نہ ہوں ،ترک کرتے ہیں اھ تلخیصاً ۔

 (۱؎ تفسیر جلالین     زیرآیۃ المذکور سورہ الم نشرح    مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی        حصہ دوم ص ۵۰۰)

(۲؎تفسیر جلالین        خطبہ کتاب         مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی        حصہ اول ص۲)علامہ زرقانی درشرح مواہب لدنیہ فرماید ھو الصحیح فقد اقتصرعلیہ الجلال وقد التزم الاقتصار علی ارجح الاقوال۳؂۔علامہ زرقانی نے شرح مواہب میں فرمایا یہی صحیح ہے کیونکہ اس پرجلال الدین نے اقتصار کیا اور انہوں نے مختار و راجح قول کے ذکر کا التزام کر رکھا ہے۔(ت)

 (۳؎ شرح المواہب اللدنیہ للزرقانی المقصد الثانی کنیۃ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم   دارالمعرفۃ بیروت   ۳/ ۱۷۱)

حدیث اوّل: مسلم ،ابوداؤد وترمذی ونسائی و ابن ماجہ و احمدودارمی و بزار و طبرانی و ابن السنی ہر ہمہ ازثوبان رضی اﷲ تعالٰی عنہ مولائے اقدس سید عالم صلی اﷲتعالٰی علیہ وسلم روایت کنند قال کان رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم اذا انصرف من صلاتہ استغفر ثلاثا وقال اللھم انت السلام تبارکت یا ذاالجلال ولاکرام ۱؎ یعنی چوں سید المرسلین صلوات اﷲ وسلامہ علیہم اجمعین از نماز برگشتے وسلام دادے سہ بار  ازحق سبحانہ، وتعالٰی مغفرت خواستے وایں دُعا گفتے خدایا توئی سلام (کہ ہیچ عیب و نقصے راگرد سراپردہ عزوجلال تو بازنیست) وازتست سلام (کہ سلامت ما بندگان ازہمہ آفات و بلیات ہمیں بقدرت و ارادت و لطف رحمت تست) برکت و عظمت مراتست اے صاحبِ بزرگی و بزرگی دہے یا رب مگر ایں حدیث در صحاح مشہور و متداول نیست یا از خداطلب مغفرت و سوال سلامت دعا نباشد آرے جہل بلائیست نہ سہل وچوں مرکب شود دوائے ندارد والعیاذ باﷲ تبارک وتعالٰی۔پہلی حدیث: مسلم ، ابوداؤد ،ترمذی ، نسائی ، ابن ماجہ، احمد، دارمی، براز، طبرانی اور ابن السنی ان تمام نے حضرت ثوبان رضی اﷲ تعالٰی عنہ خادم رسول صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم سے روایت کیا ہے کہ جب حضور سید المرسلین صلوات اﷲ وسلامہ علیہم اجمعین نماز سے رُخ انور پھیرتے (سلام کہتے) تو تین دفعہ اﷲ تعالٰی سے استغفار کرتے اور یہ دعا کرتے اللھم انت السلام ومنک السلام تبارکت یا ذاالجلال والاکرام   اے اﷲ! تُو سلام ہے (یعنی تیری ذات جل مجدہ کی طرف کوئی عیب یا نقص راہ نہیں پاسکتا) اور تیری طرف سے سلام (کہ ہم بندوں کی تمام مصیبتوں اور بلیات سے سلامتی تیری قدرت، ارادے، مہربانی اور کرم سے ہے) برکت وعظمت تیرے ہی لئے ہے اے صاحبِ بزرگی اور بزرگی عطافرمانے والے یارب۔ کیا یہ حدیث صحاح میں مشہور و متداول نہیں یا مغفرت کی طلب اور سلامتی کا سوال دعا نہیں ہوتا ۔ جہالت ایسی مرض ہے کہ اس کا علاج آسان نہیں اور جب یہ مرکب ہو جائے تو اس کا کوئی علاج ہی نہیں والعیاذ باﷲ تبرک و تعالٰی۔(ت)

 (۱؎ جامع الترمذی     باب مایقول اذاسلم        مطبوعہ امین کمپنی دہلی        ۱/ ۴۰

صحیح مسلم   باب استحباب الذکر بعد الصلاۃ الخ  مطبوعہ قدیمی کتب خانہ کراچی  ۱/ ۲۱۸)

Page:
(1) 2 3 »

Navigate through the articles
Previous article وظیفہ پڑھے مگر نماز نہ پڑھے کیا یہ جائز ہے؟ وظیفہ یا درود شریف پڑھنا درست ہے یا نہیں؟ Next article
Rating 2.89/5
Rating: 2.9/5 (291 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu