• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Qir'at/ Reciting / قراءت > ایک آیت میں کم سے کم کتنی تلاوت کی جائے

ایک آیت میں کم سے کم کتنی تلاوت کی جائے

Published by Admin2 on 2012/7/16 (1038 reads)

New Page 1

مسئلہ نمبر۵۱۶: از شہربریلی مدرسہ منظرالاسلام مولوی احسان علی صاحب     ۱۱ شوال ۱۳۳۷ھ: کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ آیت ما یجوز بہ صلٰوۃ کتنی مقدار ہے؟

الجواب: وُہ آیت کہ چھ حرف سے کم نہ ہو اور بہت نے اُس کے ساتھ یہ بھی شرط لگائی کہ صرف ایک کلمہ کی نہ ہو تو ان کے نزدیک مُدھَامّتٰناگرچہ پُوری آیت اور چھ ۶ حرف سے زائد ہے جوازِ نماز کو کافی نہیں ،اسی کو منیہ وظہیریہ وسراج وہاج و فتح القدیر و بحرالرائق و درمختار وغیرہا میں اصح کہا اور امام اجل اسبیحابی وامام مالک العلماء ابو بکر مسعود کاشانی نے فرمایا کہ ہمارے امام اعظم رضی اﷲ تعالٰی عنہ کے نزدیک صرف مدھامّتٰن سے بھی نمازجائز ہے اور اس میں اصلاً ذکر خلاف نہ فرمایا دُرمختار میں ہے:اقلھا ستۃ احرف ولو تقدیر اکلم یلد الا اذاکانت کلمۃ فالاصح عدم الصحۃ ۱؎۔اس آیت کے کم از کم چھ حروف ہوں اگر چہ وُہ لفظاً نہ ہوں بلکہ تقدیراً ہوں مثلاًلم یلد(کہ اصل میں لم یولد تھا) مگر اس صورت میں کہ جب وُہ آیت صرف ایک کلمہ پر مشتمل ہو تو اصح عدمِ صحتِ نماز ہے(ت)

 (۱؎ درمختار            فصل ویجہر الامام        مطبوعہ مجتبائی دہلی        ۱/۸۰)

ہندیہ میں ہے :الاصح انہ لا یجوز کذافی شرح المجمع لابن ملک ،وھکذا فی الظہیریۃ والسراج الوھاج وفتح القدیر۲؎۔اصح یہی ہے کہ اس سے نماز جائز نہیں شرح مجمع لابن مالک میں اسی طرح ہے۔ظہیریہ ،السراج ، الوہاج اورفتح القدیر میں بھی یوں ہی ہے۔(ت)

 (۲؎ فتاوٰی ہندیہ         الباب الرابع فی صفۃ الصلٰوۃ    مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور    ۱/۶۹)

فتح القدیر میں ہے :لو کانت کلمۃ اسماً او حرفاً نحو مدھامتٰن ص ق ن فان ھذہ اٰیات عند بعض القراء اختلف فیہ علی قولہ  والاصح انہ لا یجوز لانہ یسمی عادا لا قارئا ۳؎۔اگروُہ آیت ایک کلمہ پر مشتمل ہے خواہ اسم ہو یا حرف مثلاً مدھامتٰن ،ص،ق،ن کیونکہ یہ بعض قراء کے نزدیک آیات ہیں ان کے قول پر اس میں اختلاف ہے اور اصح یہی ہے کہ یہ جواز ِ نماز کے لئے کافی نہیں کیونکہ ایسے شخص کو قاری نہیں کہا جاتا بلکہ شمار کرنے والا کہا جاتا ہے۔(ت)

 (۳؎ فتح القدیر شرح الہدایۃ، فصل فی القرأۃ ، مطبوعہ نوریہ رضویہ سکھر، ۱/۲۸۹)

بحرالرائق میں اسے ذکر کرکے فرمایا :کذا ذکرہ الشارحون وھومسلم فی ص و نحو امافی مدھا متٰن فذکر الاسبیجابی وصاحب البدائع انہ یجوز علی قول ابی حنیفۃ من غیر ذکر خلاف بین المشائخ۴؎۔شارحین نے اسے یوں ہی بیان کیا ہے اور یہ بات ص وغیرہ میں تو مسلم مگر مدھامتٰن کے بارے میں اسبیجابی اور صاحبِ بدائع نے کہا کہ امام ابو حنیفہ کے قول کے مطابق یہ جوازِ نماز کے لئے کافی ہے اور انہوں نے مشائخ کے درمیان کسی اختلاف کا ذکر نہیں کیا۔(ت)

 (۴؎ البحرالرائق شرح کنزالدقائق    فصل واذاارادالدخول فی الصلٰوۃ    مطبوعہ ایچ ایم سعید کمپنی کراچی     ۱/۳۳۸)

بدائع میں ہے :فی ظاھر الروایۃ قدر  ادنی المفروض  بالاٰیۃ التامۃ طویلۃ  کانت  اوقصیرۃ  کقولہ تعالٰی مدھامتٰن  وماقالہ  ابوحنیفۃ اقیس ۱؎ ۔ظاہر الروایہ کے مطابق فرض قرأۃ کی مقدار کم ازکم ایک مکمل آیت ہے وہ آیت لمبی ہو یا چھوٹی ۔جیسے اﷲ تعالٰی کا ارشاد ہے مدھامتٰناورامام ابو حنیفہ رحمہ اﷲ تعالٰی نے جو کچھ فرمایا ہے وہی زیادہ قرینِ قیاس ہے۔(ت)

 (ا؎ بدائع الصنائع    فصل فی ارکان الصلٰوۃ    مطبوعہ ایچ ایم سعید کمپنی کراچی    ۱/۱۱۲)

اقول:  اظہر یہی ہے مگر جبکہ ایک جماعت اُسے ترجیح دے رہی ہے تو احتراز ہی میں احتیاط ہے خصوصاً اس حالت میں کہ اس کی ضرورت نہ ہوگی مگر مثل فجر میں جبکہ وقت قدر واجب سے کم رہا ہو ایسے وقت ثم نظرکہ بالاجماع ہمارے امام کے نزدیک ادائے فرض کو کافی ہے مدھامتٰن سے جلد ادا ہوجائے گا کہ اس میں حرف بھی زائد ہیں اور ایک مد متصل ہے جس کا ترک حرام ہے ،ہاں جسے یہی یاد ہو اُس کے بارے میں وُہ کلام ہوگا اور احوط اعادہ ۔واﷲ تعالٰی۔


Navigate through the articles
Previous article غلط قرآءت پر لقمہ دینے سے متعلق سوال قراءت میں وقف کہاں کریں؟ Next article
Rating 2.84/5
Rating: 2.8/5 (261 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu