• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Imam / امامت > کئی درجے والی مسجدوں میں امام کہاں کھڑا ہو

کئی درجے والی مسجدوں میں امام کہاں کھڑا ہو

Published by Admin2 on 2012/7/19 (1056 reads)

New Page 1

مسئلہ نمبر ۵۶۹: ازچھاؤنی کامٹی ضلع ناگپور     مرسلہ حافظ محمد یقین الدین صاحب رضوی ۱۹ شعبان ۱۳۰۷ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ جن مسجدوں میں کئی درجے ہوں اور ہردرجہ سہ درجہ پنج درجہ امام کو اُن کی ہر محراب ودر میں کھڑا ہونا مکروہ ہے یا صرف اندرونی محرابوں یا وسطانی دروں میں۔بینوا توجروا

الجواب: محرابیں وہی ہیں جووسط میں قیامِ امام کی علامت کے لئے بنائی جاتی ہیں باقی جو فرجے دو۲ ستونوں کے درمیان ہوتے ہیں درہیںاور امام کو بلاضرورت تنگی مسجد ،ہر محراب و درمیں کھڑا ہونا مکروہ ہے، پھر اطراف کے دروں میں قیام نافیِ کراہت نہیں بلکہ بسااوقت اور کراہتوں کا باعث ہوگا کہ امام راتب کو محراب چھوڑ کر ادھر اُدھر کھڑاہونا مکروہ ہے اور اگر مسجد کی صف پوری ہوئی تو اس صورت میں امام وسط صف کے محاذی نہ ہوگا یہ ہر امام کے لئے مکروہ ہے اگر چہ غیر راتب ہو،

تنویر الابصار میں ہے:کرہ قیام الامام فی المحراب مطلقا۲؎اھ مخلصا (امام کا محراب میں کھڑا ہونا مطلقاً مکروہ ہے اھ تلخیصاً۔ت)

(۲؎درمختار شرح تنویر الابصار     باب ما یفسد الصلٰو ۃ ،  مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی ، ۱/۹۲)

بحر الرائق میں ہے:مقتصی ظاہرالروایۃ الکراھۃ مطلقا۳؎ (ظاہر الروایۃکا تقاضایہی ہے کہ یہ مطلقاً مکروہ ہے ۔ت)

 (۳؎ بحرالرائق ، باب ما یفسد الصلٰو ۃ ،  مطبوعہ ایچ ایم سعید کمپنی کراچی    ۲/۲۶)

ردالمحتار میں ہے :  فی معراج الدریۃ من باب الامامۃ الاصح ماروی ان یقوم بین الساریتین او زاویۃ اوناحیۃ المسجد او الی ساریۃ لانہ بخلاف عمل الامۃ اھ وفیہ ایضا السنۃ ان یقوم الامام ازاء وسط الصف الا تری ان المحاریب مانصبت الا وسط المساجد وھی قدعینت لمقام الامام اھ وفی التاتارخانیۃ ویکرہ ان یقوم فی غیر المحراب الالضرورۃ اھ ومقتضاہ ان الامام لو ترک المحراب وقام فی غیرہ یکرہ ولوکان قیامہ وسط الصف لانہ خلاف عمل الامۃ وھوظاہرفی الامام الراتب دون غیرہ والمنفرد فاغتنم ھذہ الفائدۃ ۱ ؎ اھمعراج الدرایہ کے باب الامامت میں ہے کہ امام صاحب سے جو کچھ مروی ہے اس میں اصح یہ ہے کہ امام کا دو ۲ ستونوں کے درمیان یامسجد کے کسی گوشے میں یا مسجد کی کسی ایک جانب یا کسی ستون کی طرف کھڑا ہونا مکروہ ہے کیونکہ یہ امّت کے عمل کے خلاف ہے۔اھ اور اس میں یہ بھی ہے کہ امام کا وسطِ صف میں کھڑا ہونا سنّت ہے کیا آپ نہیں دیکھتے کہ محراب مساجد کے درمیان میں ہوتے ہیں اور یہ امام کے کھڑے ہونے کےلئے متعین ہوتے ہیں اھ اورتاتارخانیہ میں ہے امام کا ضرورت کے بغیر محراب کے علاوہ کسی جگہ کھڑا ہونا مکروہ ہے اھ اس کا تقاضا یہ ہے کہ اگر امام محراب چھوڑ کر کسی دوسری جگہ کھڑا ہوگیا اگرچہ اس کا قیام وسطِ صف میں ہو تب بھی وہ مکروہ ہوگا کیونکہ یہ عمل امّت کے خلاف ہے، اور یہ بات مقررامام کے بارے میں ہے، اگر امام مقرر نہیں یا تنہا نمازی ہے(توپھر یہ پابندی نہیں) پس اس فائدہ کو قیمتی جان اھ(ت)

 (۱؎ ردالمحتار    باب مایفسد الصلٰو ۃ    مطبوعہ مصطفی البابی مصر    ۱/۴۷۸)

اُسی میں ہے:عن المعراج عن حلوانی عن ابی اللیث لایکرہ قیام الامام فی الطاق عند الضرورۃ بان ضاق المسجد علی القوم ۲؎اھ واﷲ سبحٰنہ وتعالٰی اعلم۔معراج سے وہ حلوانی سے امام ابواللیث کے حوالے سے فرماتے ہیں کہ امام کا ضرورت کے وقت طاق میں کھڑا ہونا مکروہ نہیں مثلاً اگر مسجدنمازیوں کے لئے تنگ ہو تو ایسا کیا جاسکتا ہے اھ واﷲ سبحٰنہ وتعالٰی اعلم (ت)

 (۲؎ ردالمحتار    باب مایفسد الصلٰو ۃ    مطبوعہ مصطفی البابی مصر    ۱/۴۷۸)


Navigate through the articles
Previous article رباعی نماز میں ایک رکعت ملی تو دوسری میں قعدہ کرے جس لڑکے کے افعال اچھے نہ ہوں اسکے پیچھے نماز کیسی؟ Next article
Rating 2.79/5
Rating: 2.8/5 (255 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu