• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Imam / امامت > قرآن بھولنے کے عادی امام کی امامت کیسی ہے؟

قرآن بھولنے کے عادی امام کی امامت کیسی ہے؟

Published by Admin2 on 2012/7/29 (967 reads)

New Page 1

مسئلہ نمبر ۷۴۲: از مطبع شمس المطابع فرخ نگرضلع گوڑگانواں    مسئولہ حکیم شمس الدین مالک مطبع    ۲۸رمضان ۱۳۳۹ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ امور ذیل کرنے والے کی امامت جائز ہے یا نہیںاور اس کی بابت کیاحکم ہے باوجود نہ یاد ہونے قرآن کے کریم کے درمیان کلام مجید سے کچّی پکّی یاد پر نماز ِجمعہ میں قرأت شروع کردیتا ہے جس کی وجہ سے اکثر بلکہ عموماً نمازِ جمعہ میں بھول جانے کی وجہ سے نماز دہرائی جاتی ہے خطبہ بھی صحت ِلفظی کے ساتھ نہیں پڑھتا ہے سمجھانے پر لوگوں کو مغلظات بکنا شطرنج سے باہر ہونے کے سبب کھیلنے والوں کو اُن کے پاس بیٹھ کر چال بتانا ہمچو قسم کے لوگوں کے ساتھ کوئلے وغیرہ کی لکیروں سے طرح طرح کے پانسے بناکر کنکریوں کے ذریعہ سے مثل قمار بازان بغیر کسی شرط قائم کے کھیل کا کھیلنا ، ایسے شخص کےساتھ میل جول نشست برخاست رازداری رکھنی جو اپنے حقیقی پسرہ کی بیوہ سے اپنی زوجہ کی زندگی میں زنا کرتا ہے اور آئیندہ خواہش نکاح رکھتا ہے جس کو حالاتِ مذکورہ کی وجہ سے اہلِ برادری نے بھی خارج کردیا ہے مسجد میں بیٹھ کر اپنے خانگی معاملات میں یا ناصح آدمیوں کو فحش اور مغلظات سنانا شخص مندرج صدر کی اعانت کرنےوالے کی بابت کیا حکم ہے جبکہ اُس کی اعانت محض نفسانیت سے کرتے ہوں بصورت حالات مندرجہ صدرنمازِجمعہ دوسری مسجد میں جائز ہے یا نہیں جبکہ ایک پُرانا قصبہ مثل شہر کے ہو جس کی بنیاد شہر اور فرودگاہ افواج تواریخی حساب سے صدہا سال سے مع آبادی اہل اسلام ثابت ہے اورنمازی بھی تعداد شرعی سے زیادہ ہوجاتے ہوں۔روزہ کی حالت میں ایسے شخص کا آٹھ دس دفعہ غل کرنا جو بے صبری پر دال ہے۔ اصلی معاملہ پوشیدہ رکھ کر اپنے مطلب کی تائید میں سے فتویٰ حاصل کرنا ۔بینواتو جروا

الجواب

امام کو لازم ہے کہ نماز میں وُہ سورت یا آیات پڑھے جو اُسے پختہ طور پر یاد ہوں کچّے یاد ہونے کی وجہ سے اگر غلطی کرتا ہے تو یہ دیکھا جائے کہ وہ غلطی کس قسم کی ہے اُس سے فساد ِ معنی یا کسی واجب کا ترک لازم آتا ہے یا نہیں،اگر نہیں تو نماز دہرانا بے معنی ہے اور اس کا الزام جہالت پر ہے نہ کہ قرأت پر، اور اگر ہاں تو بے شک ایسا شخص قابلِ امامت نہیں،خطبہ میں صحتِ لفظی ہونا نماز کی طرح شرط نہیں۔ہاں ایسا خطبہ خلافِ سنّت ہے ۔مغلظات بکنا فسق ہے۔ حدیث میں ارشاد ہوا کہ فحش بکا کرنا مسلمان کی شان نہیں۱؎۔ایسے شخص کی امامت مکروہ ہے ۔شطرنج کھیلنے والوں کو چال بتانا اگر گوشہ تنہائی میں نہیں بلکہ برملا عام نطر گاہ میں ہے یا اس پر مداوت ہے تو یہ بھی فسق ہے،قمار بازوں کی طرح پانسے بناکر اُن سے کھیلنا بھی گناہ ہے اگرچہ کوئی شرط نہ لگائی جائے ۔علمائے کرام نے فرمایا کہ شراب کے دور کی طرح پانی پینا حرام ہے،

 (۱؎ جامع الترمذی         باب ماجاء فی الفحش    مطبوعہ امین کمپنی کتب خانہ رشیدیہ دہلی        ۲/۱۹)

نبی صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم فرماتے ہیں۔من تشبہ بقوم فھو منھم ۲؎ (جو کسی قوم سے مشاہبت پیدا کرے وہ انہیں میں سے ہے۔ت)

 (۲؎ مسند احمد بن حنبل        از مسند عبداﷲا بن عمر    مطبوعہ دارالفکر بیروت            ۲/۵۰،۹۲)

بیوہ پسر کا جو واقعہ لکھا اگر واقعی ہے اور حسب ِ عادت زمانہ لوگوں کی بدگمانی نہیں جس پر وہ تہمت لگانے والے خود اسی۸۰اسی۸۰ کوڑوں کے مستحق ہوں بلکہ ثبوت صحیح شرعی سے ثابت ہے تو ایسا شخص ہر گز میل جول کے قابل نہیں، مسلمانوں کو اُس کے پاس بیٹھنا منع ہے:

قال ﷲ تعالٰی

واما ینسینک الشیطان فلاتقعد بعد الذکری مع القوم الظّٰلمین۔۳؎اﷲ تعالٰی کا ارشاد مبارک ہے: اور اے سننے والے جب کہیں تجھے شیطان بھُلا دے تو یاد کر آنے کے بعد ظالموں کے پاس مت بیٹھ۔(ت)

 (۳؎ القرآن             ۶/۶۸)

اوراسے امام بنانا حرام ،

فتاوٰی حجہ میں ہے:لوقدمو فاسقایاثمون۔۱؎اگر لوگوں نے فاسق کو امامت کے لئے مقدم کیا تو وہ گناہ گار ہوں گے۔(ت)

 (۴؎ غنیـہ المستملی شرح منیہ المصلی     فصل فی الامامۃ    ،مطوعہ سہیل اکیڈمی لاہور            ص ۵۱۳)

مسجدمیں گالیا دینا سخت حرام اور بیت اﷲ کی بے ادبی ہے،ان ناصحوں کی نصیحت پر گالیاں دینا اوربھی زیادہ خبیث اور شریعت مطہرہ سے سرتابی ہے باطل پر اعانت حرام ہے

قال اﷲ تعالٰی

ولا تعاونواعلی الاثم والعدوان۱؎۔اﷲ تعالٰی کا فرمان ہے: گُناہ اور زیادتی پر باہم تعاون نہ کرو۔(ت)

 (۱؎ القرآن        ۵/۲)

ایسا شخص جس کی امامت شرعاً ممنوع ہے اگر جمعہ پڑھاتا ہو تو دوسری جگہ جمعہ پڑھیں جبکہ وہ قصبہ مصر شرعی ہو جہاں جمعہ صحیح وجائز ہے۔

فتح القدیر میں ہے:لانہ بسبیل من التحول؎۲(کیونکہ دوسری جگہ منتقل ہونا ممکن ہے۔ت)

 (۲؎ فتح القدیر        باب الامامۃ        مکتبہ نوریہ رضویہ سکھر        ۱/۳۰۴)

اور روزہ میں غل مچانا اور اظہارِ بے صبری کرنا مکروہ ہے ،حقیقت واقعہ چھپاکر علماء سے غلط فتویٰ لینا شریعت کو دھوکا دینا اور سخت حرام ہے۔واﷲ تعالٰی اعلم


Navigate through the articles
Previous article مرزائیوں کی شادی میں شرکت کرنے والے امام کا حکم سماع سننے والے کی امامت کا کیا حکم ہے؟ Next article
Rating 2.93/5
Rating: 2.9/5 (256 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu