• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Jamaat / باجماعت نماز > امام کےساتھ ایک مقتدی ہوتواسےکس طرح پیچھےکھینچے

امام کےساتھ ایک مقتدی ہوتواسےکس طرح پیچھےکھینچے

Published by Admin2 on 2012/8/7 (1718 reads)
Page:
(1) 2 »

New Page 1

مسئلہ ۸۶۱ :ازکلکتہ غلام قادربیگ صاحب    مرسلہ غلام قادربیگ صاحب     ۵رجب ۱۳۱۱ھ

کیافرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ اما م کے ساتھ ایک مقتدی برابرکھڑا ہے دوسرا اور آیا نہ وہ مقتدی اول پیچھے ہٹا نہ امام آگے بڑھا تو یہ اس مقتدی کونیت باندھ کرکھینچے یابے نیت باندھے؟ بینوا تؤجروا

الجواب

دونوں صورتیں جائز ہیں، فتح القدیر سے مستفاد کہ نیت باندھ کر کھینچنا اولٰی ہے، اور خلاصہ میں تصریح فرمائی کہ پہلے کھینچ کرنیت باندھنی مناسب ہے، بہرحال دونوں طریقے رواہیں، فتح کی عبارت یہ ہے:لواقتدی واحد باخرفجاء ثالث یجذب المقتدی بعد التکبیر ولوجذبہ قبل التکبیر لایضرہ۱؎۔اگر ایک آدمی نے دوسرے کی اقتدا کی کہ تیسرا آگیا تو وہ مقتدی کو تکبیر کے بعد کھینچے، اگر اس نے تکبیر سے پہلے ہی کھینچ لیا تو بھی کوئی حرج نہیں۔(ت)

(۱؎ فتح القدیر        باب الامامۃ            مطبوعہ مکتبہ نوریہ رضویہ سکھر        ۱ /۳۰۹)

خلاصہ کانص یہ ہے:ینبغی ان یجذب احدا من الصف فی المسجد او فی الصحراء اولاثم یکبر۲؎۔مناسب یہی ہے کہ وہ کسی ایک نمازی کوصف سے پہلے کھینچ لے خواہ مسجد ہو یا صحرا پھر تکبیر کہے۔(ت)

(۲ ؎ خلاصۃ الفتاوٰی    جنس آخر مایتصل بصحۃ الاقتداء الخ    مطبوعہ مکتبہ حبیبیہ کوئٹہ            ۱ /۱۵۷)

مگریہاں واجب التنبیہ یہ بات کہ کھینچنا اسی کوچاہئے جو ذی علم ہو یعنی اس مسئلہ کی نیت سے آگاہ ہو ورنہ نہ کھینچے کہ مبادا وہ بسبب ناواقفی اپنی نمازفاسد کرلے، تحقیق منقح اس مسئلہ میں یہ ہے کہ نماز میں جس طرح اللہ اور اللہ کے رسول کے سوا دوسرے سے کلام کرنا مفسد ہے یونہی اللہ ورسول کے سواکسی کاکہنا ماننا (جل جلالہ و صلی اللہ تعالٰی علیہ وسلم) پس اگر ایک شخص نے کسی نمازی کو پیچھے کھینچا یاآگے بڑھنے کوکہااور وہ اس کاحکم مان کرپیچھے ہٹا نمازجاتی رہی اگرچہ یہ حکم دینے والا نیت باندھ چکاہو اور اگر اس کے حکم سے کام نہ رکھابلکہ مسئلہ شرع کے لحاظ سے حرکت کی تونماز میں کچھ خلل نہیں اگرچہ اس کہنے والے نے نیت نہ باندھی ہو اس لئے بہتریہ ہے کہ اس کے کہتے ہی فوراًحرکت نہ کرے بلکہ ایک ذرہ تامل کرلے تاکہ بظاہر غیر کے حکم ماننے کی صورت بھی نہ رہے جب فرق صرف نیت کاہے اور زمانہ پرجہل غالب، توعجب نہیں کہ عوام اس فرق سے غافل ہوکربلاوجہ اپنی نماز خراب کرلیں، ولہٰذا علماء نے فرمایا: غیرذی علم کواصلاً نہ کھینچے اور یہاں ذی علم وہ جو اس مسئلہ اور نیت کے فرق سے آگاہ ہو،

درمختار میں ہے:لوامتثل امرغیرہ فقیل لہ تقدم فتقدم فسدت بل یمکث ساعۃ ثم یتقدم برایہ قھستانی معزیا للزاھدی ۱؎ ملخصا۔اگرنمازی کسی غیرکاحکم بجالایا مثلاً اسے کہاگیا آگے ہو جا وہ آگے ہوگیا تو نماز فاسد ہوجائے گی بلکہ وہ ایک گھڑی ٹھہرے اور پھر اپنی رائے سے آگے بڑھے قہستانی بحوالہ زاہدی ملخصا(ت)

(۱؎ درمختار    باب مایفسد الصلوٰۃ الخ    مطبوعہ مبطع مجتبائی دہلی    ۱ /۸۹)

Page:
(1) 2 »

Navigate through the articles
Previous article بغیر علم اک وقت میں دو جماعت ہونا کیسا ہے؟ امام انتظارکا کہہ جائے اور دوسرا جماعت کرادے تو Next article
Rating 2.70/5
Rating: 2.7/5 (303 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu