• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Jamaat / باجماعت نماز > مسجد کی چھت پرعورتوں کی جماعت کااہتمام کرنا کیسا

مسجد کی چھت پرعورتوں کی جماعت کااہتمام کرنا کیسا

Published by Admin2 on 2012/8/16 (877 reads)

New Page 1

مسئلہ ۹۴۶ :ازڈیرہ غازی خاں بلاک نمبر۱۲    مسؤلہ احمدبخش صاحب    ۸صفر۱۳۳۹ھ

حضرت ملک العلماء شمس الفضلا، مقتدائے اہل ایمان ،پیشوائے اہل ایقان ادام اﷲ تعالٰی فضلہم ومجدہم الٰی یوم الدین، السلام و علیکم ورحمۃ اﷲ وبرکاتہ،، نیازمند مشتاق زیارت محتاج دعاہزارہزار نیازکے بعد عرض کرتاہے کہ ان ایام میں ایک مسجد جدید تیارکرائی جاتی ہے جس کے متعلق یہ ارادہ ہے کہ سقف پرعورتوں کے نمازپڑھنے کی جگہ تیارہو اس حالت میں جماعت کی وضع اور صورت یہ ہوگی کہ بعض صفوف رجال جونیچے زمین پرہوں گی عورتوں کی صفوں سے مقدم اور بعض محاذی زیروبالا اور بعض مؤخر بیرونی صحن میں، پس کیاایسی جماعت اس لئے کہ عورتوں کے صفوف بعض صفوف رجال کے اوپر اور بعض صفوف رجال سے جوبیرونی صحن میں ہوں گی مقدم ہیں مکروہ یاناجائز ہوگی اس لئے کہ عورتوں کے صفوف اورصفوف رجال کے درمیان دیواریں اور پردے حائل ہوں گے یاکوئی کراہت نہیں، بینواتوجروا

الجواب

جبکہ بیچ میں سقف وجدار حائل ہیں باعث بطلان نماز رجال نہیں ہوسکتا کہ محاذات نہ ہوئی،

تنویرالابصارمیں ہے:واذا حاذتہ امرأۃ ولاحائل بینھما فی صلاۃ مطلقۃ فسدت صلاتہ ۱؎۔جب عورت نمازمطلقہ میں مرد کے محاذی ہوجائے اور ان کے درمیان کوئی چیزحائل نہ ہو تو اس مرد کی نماز فاسدہوجائے گی۔(ت)

   (۱؎ درمختار        باب الامامۃ    مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی    ۱ /۸۴)

مگریہ صورت بوجوہ کراہت وممانعت سے خالی نہ ہوگی،

اولاً عورتوں کامسجدمیں جانا خود ممنوع ہے توایک ممنوع کے لئے سامان کرنا ہے، تنویرالابصارمیں ہے:ویکرہ حضورھن الجماعۃ مطلقا علی المذھب۲؎۔مفتی بہ مذہب پرخواتین کاجماعت کے لئے حاضر ہونامطلقاً مکروہ ہے(ت)

(۲؎ درمختار        باب الامامۃ            مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی    ۱ /۸۳)

ثانیاً بے ضرورت شرعیہ مسجد کی چھت پرچڑھنامکروہ ہے یہاں تک کہ شدت گرمی بھی اس کے لئے عذرنہ مانی گئی، علمگیریہ میں ہے:الصعود علی سطح کل مسجد مکروہ ولھذا اذا اشتد الحریکرہ ان یصلوا بالجماعۃ فوقہ۳؎۔ہرمسجد کی چھت پرچڑھنا مکروہ ہے یہی وجہ ہے کہ جب گرمی سخت ہو تومسجد کے اوپر باجماعت نماز پڑھنا مکروہ ہے۔(ت)

(۳؎ فتاوٰی ہندیۃ    الباب الخامس فی آداب المسجدالخ    مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور    ۵ /۳۲۲)

ثالثاً یہ اگرچہ تقدیم محسوس نہیں مگرواقع میں بعض صفوف رجال سے تقدیم اور بعض سے معیت ضرورہے اور حکم یہ ہے کہاخروھن من حیث اخرھن اﷲ ۴؎(ان کو موخررکھو جیسا کہ اﷲ تعالٰی نے انہیں مؤخرفرمایا ہے۔ت) لہٰذا اس سے احتراز ہی کیاجائے۔ واﷲ تعالٰی اعلم

(۴؎ فتح القدیر        باب الامامۃ        مطبوعہ مطبع نوریہ رضویہ سکھر    ۱ /۳۱۲)


Navigate through the articles
Previous article حدیث میںآیا ہےکہ مقتدیوں کوکھینچ کے پیچھےکرے مغرب کی تیسری رکعت ملی تودوسری رکعت میں قعدہ کرے Next article
Rating 2.84/5
Rating: 2.8/5 (252 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu