• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Jamaat / باجماعت نماز > امام قعدہء اولیٰ میں دیر لگائے تو اسے یاد کروائیں

امام قعدہء اولیٰ میں دیر لگائے تو اسے یاد کروائیں

Published by Admin2 on 2012/8/24 (2407 reads)
Page:
(1) 2 3 4 »

New Page 1

مسئلہ ۹۶۳ : ازکلکتہ فوجداری بالاخانہ ۳۶ مرسلہ جناب مرزاغلام قادربیگ صاحب آخرربیع الاخری ۱۳۰۸ھ

کیافرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ اگرامام کو قعدہ اولٰی میں اپنی عادت سے دیرلگی اور مقتدی نے بخیال اس امر کے کہ امام کوسہو ہواہوگا تکبیربآواز بلندبنابر اطلاع امام کہی تونماز مقتدی کی فاسد ہوئی یا نہیں؟ بیّنوا تؤجّروا (بیان کرواور اجرپاؤ۔ت)

الجواب

ہمارے امام رضی اﷲ تعالٰی عنہ کے نزدیک اصل ان مسائل میں یہ ہے کہ بتانا اگرچہ لفظاً قرأت یاذکر مثلاً تسبیح وتکبیر ہے اور یہ سب اجزا واذکار نماز سے ہیں مگر معنیً کلام ہے کہ اس کا حاصل امام سے خطاب کرنا اور اسے سکھانا ہوتاہے یعنی توبھولا، اس کے بعد تجھے یہ کرناچاہئے، پرظاہر کہ اس سے یہی غرض مراد ہوتی ہے اور سامع کوبھی یہی معنی مفہوم، تو اس کے کلام ہونے میں کیاشک رہا اگرچہ صورۃً قرآن یاذکر، و لہٰذا اگرنماز میں کسی یحٰیی نامی کو خطاب کی نیت سے یہ آیہ کریمہٰییَحْٰیی خُذِالْکِتٰبَ بِقُوَّۃٍ ۱؎

( ۱؎ القرآن ۱۹ /۱۲)

پڑھی بالاتفاق نماز جاتی رہی حالانکہ وہ حقیقۃً قرآن ہے، اس بنا پرقیاس یہ تھا کہ مطلقاً بتانا اگرچہ برمحل ہو مفسد نماز ہو کہ جب وہ بلحاظ معنی کلام ٹھہرا تو بہرحال افساد نماز کرے گا مگرحاجت اصلاح نماز کے وقت یا جہاں خاص نص وارد ہے ہمارے ائمہ نے اس قیاس کوترک فرمایا اور بحکم استحسان جس کے اعلٰی وجوہ سے نص وضرورت ہے جواز کاحکم دیا، ولہٰذا صحیح یہ ہے کہ جب امام قرأت میں بھولے مقتدی کومطلقاً بتانا روااگرچہ قدرواجب پڑھ چکا ہو اگرچہ ایک سے دوسرے کی طرف انتقال ہی کیا ہو کہ صورت اولٰی میں گوواجب اداہوچکا مگر احتمال ہے کہ رکنے اور الجھنے کے سبب کوئی لفظ اس کی زبان سے ایسا نکل جائے جو مفسد نماز ہو، لہٰذا مقتدی کو اپنی نماز درست رکھنے کے لئے بتانے کی حاجت ہے، بعض عوام حفاظ کو مشاہدہ کیاگیا کہ جب تراویح میں بھولے اور یاد نہ آیا تو ایں آں یااور اسی کی قسم الفاظ بے معنی ان کی زبان سے نکلے اور فساد نماز کاباعث ہوئے، اور صورت ثانیہ میں اگرچہ جب قرأت رواں ہے تو صرف آیت چھوٹ جانے سے فسادنماز کااندیشہ نہ ہو مگر اس بات میں شارع صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم سے نص وارد:

وھو حدیث سورۃ المومنین الذی ذکرہ المحقق فی الفتح وغیرہ فی غیرہ مع اطلاقات احادیث اخر واردۃ فی الباب کما بینہ فی الحلیۃ من المفسدات، اقول والاحسن من کل ذٰلک التمسک بمااخرج ابوداؤد و عبداﷲ ابن الامام فی زوائد المسند عن مسور بن یزید المالکی قال صلی رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم فترک اٰیۃ فقال لہ رجل یارسول اﷲ اٰیۃ کذا وکذا فقال فھلا اذکرتنیھا ۱؎اور وہ سورہ مومنین کے بارے میں حدیث وارد ہے محقق نے فتح میں اور دیگر فقہا نے مختلف کتب میں اسے ذکر کیا باوجودیکہ دیگراحادیث اس باب میں مطلق ہیں جیسا کہ حلیہ میں مفسدات صلوٰۃ کے باب میں بیان ہواہے اقول (میں کہتاہوں) سب سے احسن تمسک کے لحاظ سے وہ حدیث ہے جسے ابوداؤداور عبداﷲ بن امام احمدنے زوائد مسندمیں حضرت مِسوَربن یزیدمالکی رضی اﷲ تعالٰی عنہ سے روایت کیاکہ نبی اکرم صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم نے نماز پڑھائی تو آپ نے ایک آیت چھوڑدی ایک آدمی نے عرض کیا: یارسول اﷲ ! آیت تو ایسے ہے، تو آپ نے فرمایا : تونے مجھے یاد کیوں نہ کرائی،

 (۱؎ سنن ابوداؤد    باب الفتح علی الامام فی الصلاۃ    مطبوعہ آفتاب عالم پریس لاہور    ۱ /۱۳۱)

وذٰلک لان حدیث الفتح فی ترک کلمۃ وھوانہ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم قرأ فی الصلاۃ سورۃ المومنین فترک کلمۃ فلما فرغ قال الم یکن فیکم أبی قال بلی قال ھلا فتحت علی ۱؎ فظاھر ان حکم ترک کلمۃ اضیق من حکم الانتقال من اٰیۃ الی اٰیۃ۔اور وہ اس لئے کہ حدیث جو ایک کلمہ کے ترک پرلقمہ دینےکے بارے میں ہے یہ ہے کہ نبی اکرم صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم نے نماز میں سورہ مومنون کی تلاوت فرمائی اور ایک کلمہ چھوڑدیا جب آپ فارغ ہوئے توفرمایا: کیا تم میں اُبی نہیں؟ عرض کیا: یارسول اﷲ ! موجودہوں، فرمایا: مجھے لقمہ کیوں نہ دیا۔ اور یہ واضح ہے کہ کلمہ کاترک کرنا ایک آیت سے دوسری آیت کی طرف منتقل ہونے سے زیادہ تنگ ہے

 (۱؎ فتح القدیر         باب مایفسد الصلوٰۃ ومایکرہ فیہا    مطبوعہ نوریہ رضویہ سکھر    ۱ /۳۴۸)

واثر علی کرم اﷲ تعالٰی وجھہ اذا ستطعمکم الامام فاطعموہ۲؎ رواہ سعید بن منصور فی سننہ وذکرہ فی الحلیۃ والفتح، فیما اذا سکت الامام ینتظر الفتح،اور حضرت علی کرّم اﷲ وجہہ،کاکہنا ہے کہ جب امام تم سے لقمہ چاہے تولقمہ دو، اسے سعید بن منصور نے اپنی سنن میں روایت کیاہے، حلیہ اور فتح میں اسے اس صورت کے بارے میں کہ، جب امام خاموش ہوجائے اور لقمہ کاانتظار کرے، ذکرکیاگیا ہے۔

 (۲؎ فتح القدیر     باب مایفسد الصلوٰۃ ومایکرہ فیہا    مطبوعہ نوریہ رضویہ سکھر    ۱ /۳۴۸)

وحدیث انس رضی اﷲ تعالٰی عنہ کنا نفتح علی عھد رسول اﷲ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم علی الائمۃ۳؎ رواہ الدارقطنی والحاکم وصححہ مجمل بخلاف ماذکرناففیہ تصریح ترک اٰیۃ وان کان قد یقال علی ھذا و علی ماتمسک بہ فی الفتح من حدیث الکلمۃ انھما من وقائع العین لیس فیھما ان ذٰلک کان بعد ثلاث اوقبلھا۔حضرت انس رضی اﷲ تعالٰی عنہ سے مروی حدیث کہ ہم رسالت مآب صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کی ظاہری حیات میں اپنے ائمہ کو لقمہ دیاکرتے تھے اسے دارقطنی اور حاکم نے روایت کیا اور صحیح کہا، یہ حدیث مجمل ہے بخلاف اس حدیث کے جوہم نے ذکرکی، اس میں ترک آیت کی تصریح ہے اگرچہ اس آیت کے ترک والی اور وہ حدیث جس میں کلمہ کاترک مذکور ہے جس سے فتح القدیرمیں استدلال کیاگیاہے، پراعتراض کیاگیاہے، یہ خاص واقعات ہیں اس میں اس بات کاتذکرہ نہیں کہ یہ تین آیات پڑھنے کے بعد ہوا یاپہلے ہو۔(ت)

 (۳؎ سنن الدارقطنی     باب تلقین المأ موم لامامہ الخ     مطبوعہ نشرالسنۃ ملتان۱ /۳۹۹)

Page:
(1) 2 3 4 »

Navigate through the articles
Previous article نمازی کے آگے سے گزرنے کے احکام اکیلا نمازی بلند آواز سے تکبیر کہے تو نماز ہوگی؟ Next article
Rating 2.75/5
Rating: 2.7/5 (306 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu