• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Namaz / Salat / Prayer / نماز > دروازے کو بند کرکےمزار کے سامنے نماز پڑھنا کیسا؟

دروازے کو بند کرکےمزار کے سامنے نماز پڑھنا کیسا؟

Published by Admin2 on 2012/8/26 (1502 reads)
Page:
(1) 2 »

New Page 1

مسئلہ ۹۸۶: ازسرکار پاک پٹن شریف ضلع منٹگمری درگاہ اقدس مرسلہ امام علی شاہ صاحب ۷ ربیع الآخر شریف ۱۳۳۱ھ

حق، حق، حق، جناب مولٰنا! السلام علیکم، مکلف ہوں کہ اس مسئلہ میں آپ کیافرماتے ہیں کہ کسی بزرگ کے آستانہ پاک میں اسی بزرگ صاحب مزار کے روضہ منورہ کے دروازے کوبند کرکے روضہ کے آگے ہی اگرنماز پڑھ لی جائے توشرعاً جائز ہے یانہیں؟ یہ مسئلہ اخبار دبدبہ سکندری میں لکھ دیاجائے تاکہ سب لوگ دیکھ لیں۔ زیادہ نیازالمکلف فقیر محمد امام علی شاہ اولاد باباصاحب رحمہ اﷲ تعالٰی ازدرگاہ حضرت جناب بابا صاحب رحمہ اﷲ تعالٰی گنج شکر قطب عالم اغیاث ہند پاک پٹن شریف ضلع منٹگمری

الجواب

جناب شاہ صاحب وعلیکم السلام ورحمۃ اﷲ وبرکاتہ،، صورت مذکورہ میں نمازجائز اور بلاکراہت جائز، اور قرب مزار محبوباں کردگار کے باعث زیادہ مثمر برکات وانوار و مورد رحمت جلیلہ غفار۔ خلاصہ و ذخیرہ و محیط و ہندیہ وغیرہا میں ہے:واللفظ لھذین قال محمد اکرہ ان تکون قبلۃ المسجد الی المخرج والحمام والقبر۱؎ان دونوں کی عبارت یہ ہے امام محمد رحمہ اﷲ تعالٰی نے فرمایا کہ میں مسجد کے قبلہ کابیت الخلا، حمام اور قبر کی طرف ہونامکروہ جانتاہوں

 (۱؎ فتاوٰی ہندیہ        الباب الخامس فی آداب المسجد الخ    مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور    ۵ /۳۱۹)

 (الی قولہ اعنی المحیط) ھذا کلہ اذا لم یکن بین المصلی وبین ھذہ المواضع حائط اوسترۃ امااذاکان لایکرہ ویصیر الحائط فاصلا۲؎۔ (محیط کے قول تک) یہ اس وقت ہے جب نمازی اور ان کے درمیان کوئی دیواریاسُترہ نہ ہو لیکن اگردرمیان کوئی چیز ہے تومکروہ نہیں اب دیوار ان کے درمیان فاصل ہوجائے گی۔(ت)

 (۲؎ فتاوٰی ہندیہ        الباب الخامس فی آداب المسجد الخ    مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور    ۵ /۳۲۰)

سرکاراعظم مدینہ طیبہ صلی اﷲ تعالٰی علٰی من طیبہا وآلہٖ وسلم میں روضہ انور حضوراقدس صلی ا ﷲ تعالٰی علیہ وسلم کے سامنے نمازیوں کی صفیں ہوتی ہین جن کاسجدہ خاص روضہ انور کی طرف ہوتاہے مگرنیت استقبال قبلہ کی ہے، نہ استقبال روضہ اطہر کی۔ لہٰذا ہمیشہ علمائے کرام نے اسے جائز رکھا ہاں بلامجبوری مزاراقدس کوپیٹھ کرنے سے منع فرمایا اگرچہ نماز میں ہو، منسک متوسط اور اس کی شرح مسلک متقسط ملاعلی قاری میں ہے: (لایستدبر القبر المقدس) ای فی صلاۃ ولاغیرھا الالضرورۃ ملجئۃ الیہ۳؎۔ (مزاراقدس کی طرف پشت نہ کرے) نماز اور غیرنماز میں البتہ جب کوئی مجبوری وضرورت ہو تو کوئی حرج نہیں(ت)

 (۳؎ مسلک متقسط مع ارشاد الساری    باب زیارت سیدالمرسلین صلی اﷲ علیہ وسلم    مطبوعہ دارالکتاب العربیۃ بیروت    ص۳۴۲)

نیز شرح مذکور میں ہے:لاتکرہ الصلٰوۃ خلف الحجرۃ الشریفۃ الا اذا قصدالتوجہ الٰی قبرہ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم۱؎۔حجرہ شریف کے سامنے نماز اداکرنا مکروہ نہیں مگر اس صورت میں جب توجہ سے مقصود ہی آپ صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کی قبرشریف ہو۔(ت)

 (۱؎ مسلک متقسط مع ارشاد الساری    باب زیارت سیدالمرسلین صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم مطبوعہ دارالکتاب العربیۃ بیروت ص۳۲۲)

 (۱) امام اجل قاضی عیاض شرح صحیح مسلم شریف پھر(۲)علامہ طیبی شرح مشکوٰۃ المصابیح پھر(۳)علامہ قاری مرقاۃ المفاتیح نیز(۴)علامہ محدث طاہر فتنی مجمع بحارالانوار نیز(۵)امام قاضی ناصرالدین بیضاوی پھر(۶)امام جلیل علامہ محمودعینی عمدۃ القاری شرح صحیح بخاری پھر (۷)امام احمد محمد خطیب قسطلانی ارشاد الساری شرح بخاری نیز (۸)امام ابن حجرمکی شرح مشکوٰۃ شریف پھر(۹)شیخ محقق محدث دہلوی لمعات التنقیح میں فرماتے ہیں:وھذا لفظ الاولین،من اتخذ مسجدا فی جوار صالح اوصلی فی مقبرہ وقصد الاستظھار بروحہ اووصول اثر من اٰثار عبادتہ الیہ، لاللتعظیم لہ و التوجہ نحوہ، فلاحرج علیہ الاتری ان مرقد اسمٰعیل علیہ الصلاۃ و السلام فی المسجد الحرام عند الحطیم، ثم ان ذلک المسجد افضل مکان یتحری المصلی لصلاتہ۲؎۔یعنی جس نے کسی نیک بندے کے قرب میں مسجد بنائی یامقبرہ میں نمازپڑھی اور اس کی روح سے استمداد و استعانت کاقصدکیایا یہ کہ اس کی عبادت کاکوئی اثرپہنچے، نہ اس لئے کہ نماز سے اس کی تعظیم کرے یانمازمیں اس کی طرف منہ ہوناچاہے تواس میں کوئی حرج نہیں، کیا دیکھتے نہیں کہ سیدنا اسمعیل علیہ الصلوٰۃ والسلام کا مزارشریف خاص مسجد الحرام میں حطیم کے پاس ہے پھر یہ مسجد سب سے افضل وہ جگہ ہے کہ نمازی نماز کے لئے جس کاقصد کرے۔

 (۲؎ شرح طیبی علٰی مشکوٰۃ المصابیح    الفصل الاول باب المساجد ومواضع الصلوٰۃ    مطبوعہ ادارۃ القرآن والعلوم الاسلامیہ کراچی    ۲ /۲۳۵)

Page:
(1) 2 »

Navigate through the articles
Previous article امام دروازے میں کھڑے ہو کر جماعت کروائے توکیسا ہے؟ انگریزی وضع کے کپڑے پہنناکیسا؟ اور نماز کا حکم Next article
Rating 2.83/5
Rating: 2.8/5 (288 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu