• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Namaz / Salat / Prayer / نماز > میں عذر کے سبب اونچی دھوتی باندھتا ہوں، یہ کیسا ہے؟

میں عذر کے سبب اونچی دھوتی باندھتا ہوں، یہ کیسا ہے؟

Published by Admin2 on 2012/8/26 (1044 reads)

New Page 1

مسئلہ ۹۹۵: ازمارہرہ مطہرہ ضلع ایٹہ محلہ کمبوہان مرسلہ تاج الدین حسین خاں صاحب ۵جمادی الاخری ۱۳۱۷ھ

موسم گرما میں مَیں ساری بہت نیچی باندھتاہوں اکثرنماز مولوی صاحبوں کے ہمراہ پڑھی کسی نے اعتراض نہ کیا ایک سیدصاحب سے دریافت کیا توفرمایا جواونچی دھوتی باندھتے ہیں ان کو کانچھ کھولنی ضرور ہے کہ سترپوشی ہو اور تم بہت نیچی باندھتے ہو اس میں ضرورنہیں کہ سترچھپارہتاہے، میں نماز بیٹھ کرپڑھتاہوں کھڑے ہوکرنہیں پڑھ سکتا اس پرچند آدمیوں نے اعتراض کیا کہ کھول دیا کرو ورنہ نماز میں خلل پڑتاہے، پس آں مخدوم کوتکلیف دیتاہوں حکم شرح بیان فرمائیے، اور اگرباندھنا ساری کاداخل پوشاک مشرکین ہو تو میں موقوف کروں کیونکہ میرا اعتقاد آپ کے قول پر ہے بمقابلہ آپ کے میں کسی کے قول کو ترجیح نہیں دیتاہوں بقول مخدوم میناصاحب قدس سرہ العزیز    ؎

ہمہ شہرپُرزخُوباں منم وخیال ماہے

چکنم کہ چشم بدخونکند بکس نگاہے (تمہارا شہرخوبصورت حضرات سے بھراہے، میراذوق اپناہے، میں کیاکروں کہ بدخو آنکھ کسی پربھی ایک نگاہ نہیں ڈالتی)                                        زیادہ نیاز

الجواب

مکرمی سلمکم اﷲ تعالٰی! جواب مسئلہ اُنہی لفظوں میں ہے جو آپ نے تحریر فرمائے کہ اس عقدے کو حل فرمائیے واقعی ساری پیچھے سے نہ کھولنا کراہت نماز کاموجب ہے۔ رسول اﷲصلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم فرماتے ہیں:امرت ان لااکف شعرا و لاثوبا۱؎ (مجھے اس بات کاحکم دیاگیاہے کہ میں بال اکٹھے نہ کروں اور نہ کپڑا اٹھاؤں۔ت)

 (۱؎ صحیح مسلم        باب اعضاء السجود والنہی عن کف الثوب    مطبوعہ نورمحمد اصح المطابع کراچی    ۱ /۱۹۳)

غنیہ شرح منیہ میں ہے:یکرہ ان یکف ثوبہ وھوفی الصلاۃ بعمل قلیل بان یرفعہ من بین یدیہ او من خلفہ عن السجود او یدخل فیھا وھو مکفوف کما اذا دخل وھومشمرا لکم او الذیل۔۱؎۔نماز میں عمل قلیل کے ساتھ کپڑا اٹھانا مکروہ ہے یوں کہ آگے یاپیچھے سے اپنا کپڑا اٹھائے یا نماز میں کپڑا چڑھائے ہوئے داخل ہونا اور یہی حکم ہے جبکہ نمازی آستین یادامن چڑھائے ہوئے ہو۔(ت)

 (۱؎ غنیۃ المستملی شرح منیۃ المصلی    کراہیۃ الصلوٰۃ    مطبوعہ سہیل اکیڈمی لاہور    ص۳۴۸)

اور ساری یادھوتی باندھنا جہاں کے شرفا میں اس کا رواج نہ ہو جیسے ہمارے بلاد وہاں شرفا کے لئے خود بھی کراہت سے خالی نہیںکماحققناہ فی کتاب الحظر من فتاوٰنا (ہم نے اس کی تحقیق اپنے فتاوٰی کی کتاب الحظر میں کی ہے۔ت) اور اگروہاں کے مسلمان اسے لباس کفار سمجھتے ہوں تواحترازمؤکد ہے حرج پیچھے گُھرسنے میں ہے ورنہ تہبند توعین سنت ہے اور گِٹّوں سے اُوپر تک ہوناچاہئے اس سے زیادہ نیچی مکروہ ہے واﷲ تعالٰی اعلم یہ تو آپ کے سوال کاجواب تھا اور ان سب باتوں سے زیادہ ضروری مسئلہ قیام نماز ہے فرض و وتر وسنت فجر بیٹھ کرپڑھنے کی اجازت صرف اس حالت میں ہے کہ کھڑے ہونے پراصلاً قدرت نہ ہو نہ دیوار کی ٹیک نہ کسی آدمی یالکڑی کے سہارے سے ، اور عجزبھی ایسا ہو کہ ایک بار اﷲ اکبر کہنے کی دیر تک بھی کھڑانہ ہوسکے اگر اتنی ہی دیر قیام کی طاقت ہو اگرچہ کسی سہارے سے، توفرض ہے کہ تکبیر تحریمہ کھڑے ہوکر کہے پھرطاقت نہ رہے توبیٹھ جائے، آج کل اکثر لوگ اس کاخلاف کرتے ہیں ذراتکلیف ہوئی اور نماز بیٹھ کر پڑھ لی اور سیدھے کھڑے ہوکرگھرکو راہی ہوئے، یوں نمازیں قطعاً باطل ہوتی ہیں بلکہ جتنی دیر جس قدر اور جس طرح کھڑے ہونے کی قدرت ہو اتناقیام ہررکعت میں فرض ہے، یہ مسئلہ خوب یادرکھنے کاہےوقد بیناہ فی فتاوٰنا وباﷲ التوفیق ثم السلام


Navigate through the articles
Previous article آستین کہنی تک چڑھی ہوئی نماز پڑھنی مکروہ ہے؟ کیا جوتیوں کوسجدہ کے روبرو رکھنا منع ہے؟ Next article
Rating 2.80/5
Rating: 2.8/5 (292 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu