• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Masjid / Waqf / مسجد، وقف > موجودہ مسجد کے بالکل قریب نئی مسجد بنا لینا کیسا

موجودہ مسجد کے بالکل قریب نئی مسجد بنا لینا کیسا

Published by Admin2 on 2012/11/1 (1069 reads)

New Page 1

مسئلہ۱۱۱۷:  از بری سال    مرسلہ جان محمود    ساکن چاند

کیا فرماتے ہیں علمائے دین مفتیانِ شرع متین اس مسئلہ میں ایک مسجد مدت سے قائم ہے اور وہ خود متولی ہے اور جمعہ کی نماز بھی ہمیشہ پڑھی جاتی ہے ابھی متولی مسجد نے ایک شخص کو کسی وجہ سے منع کیا کہ وہ اس مسجد میں نہ آئے جب اُس کو منع کیا تو وہ شخص اور چند مصلی مجتمع ہو کر دوسری جگہ پر ایک مسجد نئی بناکر لی اس قدر فاصلہ پر ہے کہ اگر بلند آواز سے اذان کہے تو احتمال سنائی کی ہے، اس صورت میں دونو ں مسجدوں میں جمعہ کی نماز جائزہے یا ایک میں ، اگر ایک میں ہے تو اوّل یا ثانی ، اگر صورت، مذکورہ میں منع کرنا کسی مصلی کو شرعاً کوئی وجہ سے جائز ہے یا نہیں ؟ بینوابحوالۃ الکتاب توجروا یوم الحساب۔

الجواب

جو شخص موذی ہو کہ نمازیوں کو تکلیف دیتاہے برابھلا کہتا ہے شریر ہے اُس سے اندیشہ رہتاہے ایسے شخص کو مسجد میں آنے سے منع کرنا جائز ہے، اور اگر بد مذہب گمراہ مثلاًوہابی یا رافضی یا غیر مقلد یا نیچری یا تفضیلی وغیرہا ہے اور مسجد میں آکر نمازیوں کو بہکاتا ہے اپنے مذہب ناپاک کی طرف بلاتا ہے تو اسے منع کرنا اور مسجد میں نہ آنے دینا ضرور  واجب ہے۔

فقد نص فی العینی ثم المختار وغیرھما من معتمدات الاسفار،باخراج کل موذ و لوبلسانہ۔۱؎

علامہ عینی نے تصریح کی ہے پھر درمختار وغیرہ معتمد کتب میں ہے کہ ہر ایذادینے والے کو مسجد سے نکال دیا جائے خواہ اس کی اذیّت زبان سے ہو ۔(ت)

۱؎ دُرمختار     آخر باب ما یفسد الصلوٰۃ        مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی            ۱ /۹۴

یوُنہی جس کے بدن میں بدبو ہو کہ اس سے نمازیوں کو ایذا ہو مثلاًمعاذاﷲ گندا دہن یا گندا بغل یا جس نے خارش وغیرہ کے باعث گندھک ملی ہو اسے بھی مسجد میں نہ آنے دیا جائے لقولہ صلی اﷲتعالٰی علیہ وسلم فلا یقربن مصلانا۲؎ (رسالتمآب صلی اﷲ تعالٰی علیہ وسلم کا فرمان ہے کہ وہ ہرگز ہماری نماز گاہ کے قریب نہ آئے ۔(ت)

اور بلاوجہ شرعی اپنی کسی رنجش دنیوی کے باعث مسجد سے کسی مسلمان کو  روکنا سخت گناہ ہے۔

۲ ؎ مجمع الزوائد     کتاب الصلوٰۃ باب فیمن اکل ثوماالخ    مطبوعہ دارالکتاب بیروت            ۲ / ۱۷

لقولہ تعالی ومن اظلم ممن منع مسٰجد اﷲ ان یذکر فیھا اسمہ و سعٰ فی خرابھا۳؎

اﷲتعالٰی کا فرمان ہے :اور کون اس سے بڑھ کر ظالم ہو سکتاہے جو اﷲکے نام کے ذکر سے روکے اور ان کی بربادی میں کوشاں ہو۔(ت)

۳؎ القرآن   ۲ /۱۱۴

اور مسجد جبکہ نہ نیت خالصہ بنا  ئی جائے تو پہلی مسجدکے کسی قدر  قریب ہو کچھ حرج نہیں۔

لما فی الاشباہ والدر ان لاھل المحلۃ جعلوا المسجد الواحد مسجدین ۴؎اشباہ اور در میں ہے کہ اہل محلہ کے لئے جائز ہے کہ ایک مسجد کو وہ دو مساجد بنالیں۔(ت)

۴؎الاشباہ والنظائر    القول فی احکام المسجد     مطبوعہ ادارۃ القرآن والعلوم الاسلامیہ کراچی    ۲ /۲۳۴،  ۲۳۵)

درمختار         قبیل باب الوتر و النوافل    مطبوعہ مطبع مجتبائی دہلی            ۱/ ۹۴

مگر جمعہ قائم کرنے کے لئے ضرور  ہے کہ امامِ جمعہ وہ ہو جسے بادشاہِ اسلام نے امامِ  جمعہ مقررکیا یا وہ جسے اس نے اپنا نائب کیا اور یہ نہ ہو تو  وہ جسے اہل اسلام جمع ہو کر امامِ جمعہ مقرر ومعین کریں، ہر شخص جمعہ و عیدین کی امامت نہیں کرسکتا

کما نصوا علیۃ معتمدات المذھب(جیساکہ اس پر معتمدات مذہب نے تصریح کی ہے ۔ت)

اس طرح کا امام اگر اس دوسری مسجد کو میسر ہوگا تو  اس میں بھی جمعہ جائز ہوگا ورنہ نہیں ۔ واﷲ سبحٰنہ وتعالٰی اعلم۔


Navigate through the articles
Previous article گرمی کی وجہ سے مسجد کی چھت پر نماز پڑھنا کیسا؟ حوض کی فصیل خارج مسجد ہے یا نہیں؟ Next article
Rating 2.62/5
Rating: 2.6/5 (253 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu