• Qur'an

    In Qur'an section, we will upload translations of Qu'an in different languages. The best Urdu translation of Qur'an is "Kanzul Iman", Alhamdulillah it has been translated in many languages of the world. In this section you can also read online the great Tafaseer (Commentary) of Qu'ran, including TAFSEER-E-NAEEMI and others.

    more »

     
  • Hadith

    In Hadith section, you will be able to read online the different collections of Hadith, translation and commentary on Hadith (Sharha). We will try to upload upload Hadith with Urdu translations and Urdu Sharha of Hadiths, in scanned and unicode format, In Sha Allah.

    more »

     
  • Fiqh

    Fiqh section contains big collection of Fatawa written by Sunni Ulema (Scholars of Islam). Alhamdulillah most of the fatawa collections are brought online for the first time. You can find solution of any issue as per the guidance of Qur'an and Sunnah. It includes, Fatawa Ridawiyyah, Fatawa Amjadiyyah, Fatawa Mustafviyyah and a lot more.

    more »

     
  • Dedication

    This website is particularly dedicated to the Revivalist of Islam in the 14th century, i.e. Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi Alaihir Rahmah. We want to bring online the uttermost research work being carried out over his personality and works around the globe. For further details visit "Works on Alahazrat" Section

    more »

     
  • Books of Alahazrat

    Books written by Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi contain extensive research on various branches of Islamic arts & sciences. This website gives you an opportunity to explore this hidden treasure. You can dip into this sea of knowledge by visiting this section

    more »

     
  • Fatawa Ridawiyyah

    Fatawa Ridawiyyah is one of the greatest writtings of Alahazrat Imam Ahmad Raza Khan Bareilvi. The new translated version of this historical Fatawa consists of 30 volumes and more than 21000 pages. Reading this fatawa with care and memorizing the principles mentioned therein, can take the reader to a big height in Islamic Jurisprudence.

    more »

     
  • Sunni Library

    - Sunni Library is a collection of core Islamic Literature. You can read online the great work and contribution of Sunni Islamic scholars worldwide in general and by the Scholars of Sub Continent in particular.

    more »

     
Login
Username:

Password:

Remember me



Lost Password?

Register now!
Main Menu
Themes

(2 themes)
Fiqh > Q. & Ans. > Namaz / Salat / Prayer / نماز > دروازے کو بند کرکےمزار کے سامنے نماز پڑھنا کیسا؟

دروازے کو بند کرکےمزار کے سامنے نماز پڑھنا کیسا؟

Published by Admin2 on 2012/8/26 (1511 reads)
Page:
« 1 (2)

اخیرین کے لفظ یہ ہیں:خرج بذلک اتخاذ مسجد بجوار نبی او صالح والصلٰوۃ عند قبرہ لالتعظیمہ والتوجہ نحوہ بل لوصول مدد منہ حتی تکمل عبادتہ ببرکۃ مجاورتہ لتلک الروح الطاھرۃ فلاحرج فی ذلک لما ورد ان قبر اسمعیل علیہ الصلٰوۃ والسلام فی الحجر تحت میزاب وان فی الحطیم وبین الحجر الاسود وزمزم قبرسبعین نبیا ولم ینہ احد عن الصلاۃ فیہ۱؎۔یعنی کسی نبی یاولی کے قرب میں مسجدبنانا اور ان کی قبرکریم کے پاس نمازپڑھنا نہ ان دو نیتوں سے بلکہ اس لئے کہ اُن کی مدد مجھے پہنچے اُن کے قرب کی برکت سے میری عبادت کامل ہو اس میں کچھ مضائقہ نہیں کہ وارد ہوا ہے کہ اسمعیل علیہ الصلوٰۃ والسلام کا مزارپاک حطیم میں میزاب الرحمۃ کے نیچے ہے اور حطیم میں اور سنگِ اسود وزمزم کے درمیان ستّرپیغمبروں کی قبریں ہیں علیہم الصلوٰۃ والسلام، اور وہاں نماز پڑھنے سے کسی نے منع نہ فرمایا۔

شیخ محقق فرماتے ہیں: کلام الشارحین متطابق فی ذٰلک۲؎ تمام اصحاب شرح اس بارے میں یک ز بان ہیں۔

 (۱؎ لمعات التنقیح شرح مشکوٰۃ المصابیح  باب المساجد ومواضع الصلاۃ    مطبوعہ معارف علمیہ لاہور     ۳ /۵۲

(۲؎ لمعات التنقیح شرح مشکوٰۃ المصابیح     باب المساجد ومواضع الصلاۃ    مطبوعہ معارف علمیہ لاہور        ۳ /۵۲)

الحمدﷲائمہ کرام کے اس اجماع واتفاق نے جان وہابیت پرکیسی قیامت توڑی کہ خاص نماز میں مزارات اولیائے کرام سے استمداد واستعانت کی ٹھہرادی، اب توعجب نہیں کہ حضرات وہابیہ تمام ائمہ دین کو گور پرست کالقب بخشیںولاحول ولاقوۃ الاَّ باﷲ العلی العظیمپھر روضہ مبارک کادروازہ مبارک بند کرنے کی بھی ضرورت اس حالت میں ہے کہ قبرانور نمازی کے خاص سامنے ہو اور بیچ میں چھڑی وغیرہ کوئی سترہ نہ ہو اور قبراتنی قریب ہو کہ جب یہ خاشعین کی سی نمازپڑھے توحالت قیام میں قبر پرنظرپڑے، اور اگر مزارمبارک ایک کنارے کو ہے یابیچ میں کوئی سترہ ہے اگرچہ آدھ گز اونچی کوئی لکڑی ہی کھڑی کرلی ہو یامزارمطہر نماز کی جگہ سے اتنی دورہے کہ نمازی نیچی نظرکئے اپنے سجدہ کی جگہ نظرجمائے تومزارشریف تک نگاہ نہ پہنچے تو ان صورتوں میں دروازہ بند کرنے کی بھی حاجت نہیں یونہی نمازبلاکراہت جائزہے۔

 (۱)تاتارخانیہ پھر(۲)فتاوٰی علمگیریہ میں ہے:ان کان بینہ وبین القبر مقدار ما لوکان فی الصلٰوۃ و یمرانسان لایکرہ فھھنا ایضا لایکرہ۳؎۔اگرنمازی اور قبر کے درمیان اتنافاصلہ ہو کہ آدمی نماز میں ہو اور اس کے آگے سے کسی آدمی کاگزرنامکروہ نہ ہو تو یہاں بھی کراہت نہ ہوگی۔(ت)

 (۳؎ فتاوٰی ہندیہ        الفصل الثانی فیمایکرہ فی الصلوٰۃ ومالایکرہ    مطبوعہ نورانی کتب خانہ پشاور    ۱ /۱۰۷)

 (۳)جامع مضمرات شرح قدوری پھر (۴) جامع الرموز شرح نقایہ پھر (۵) طحطاوی علی مراقی الفلاح و(۶)ردالمحتارعلامہ شامی میں ہے:لاتکرہ الصلٰوۃ الٰی جھۃ القبر الا اذا کان بین یدیہ بحیث لوصلی صلاۃ الخاشعین وقع بصرہ علیہ۱؎۔قبر کی طرف نمازپڑھنا مکروہ نہیں مگر اس صورت میں جبکہ نمازی خشوع سے نمازپڑھ رہاہو(جائے سجدہ پرنظرہو) توقبر پرنظرپڑے(ت)

 ( ۱؎ مراقی الفلاح مع حاشیۃ الطحطاوی    فصل فی بیان الاحق بالامامۃ    مطبوعہ نورمحمد کارخانہ تجارت کتب کراچی     ص۱۹۶)

یہ قلب وہابیت پرکیسا شاق ہوگا کہ مزارمبارک بلاحائل بے پردہ صرف چارپانچ گزکے فاصلے سے عین نماز میں نمازی کے سامنے ہے اور نمازبلاکراہت جائز، کیایہ فقہائے کرام کو قبر پرست نہ کہیں گے،والعیاذباﷲ رب العٰلمین۔یہ سب اُس صورت میں ہے کہ وہ بہ نیت فاسدہ نہ ہوں یعنی نماز سے تعظیم قبر کاارادہ یابجائے کعبہ نمازمیں استقبال قبرکاقصد۔ ایسا ہو تو آپ ہی حرام بلکہ معاذاﷲ نیت عبادت قبرہو توصریح شرک و کفرمگر اس میں مزارمقدس کی جانب سے حرج نہ آیا بلکہ اس شخص کافاسد ارادہ یہ فساد لایا اس کی نظیریہ ہے کہ کوئی ناخدا ترس کعبہ معظمہ کے سامنے اس نیت سے نمازپڑھے کہ وہ کعبہ کی طرف نہیں بلکہ وہ خود کعبہ کوسجدہ کرتاہے یا نمازتعظیم کعبہ کے لئے پڑھتاہے ایسی نماز بیشک حرام اور نیت عبادت کعبہ ہو توسلب اسلام مگراس میں کعبہ معظمہ کا کیاقصور ہے یہ تو اس کی نیت کافتورہے، یونہی جومزارات کے حضورہے اور مزارکریم مستورہے یا نظرخاشعین سے دورہے توفاسدنیت سے مازورہے اور تبرک واستمداد کی نیت سے ماجورہے کہ نمازو نیاز کااجتماع نورٌ علٰی نورہے۔واﷲ سبحٰنہ وتعالٰی اعلم وعلمہ جل مجدہ اتم واحکم۔

Page:
« 1 (2)

Navigate through the articles
Previous article امام دروازے میں کھڑے ہو کر جماعت کروائے توکیسا ہے؟ انگریزی وضع کے کپڑے پہنناکیسا؟ اور نماز کا حکم Next article
Rating 2.83/5
Rating: 2.8/5 (289 votes)
The comments are owned by the poster. We aren't responsible for their content.
show bar
Quick Menu