مرنے والے کا کفارہ وارثین قرض لے کر دیں تو کیسا ہے؟
Category : Namaz / Salat / Prayer / نماز
Published by Admin2 on 2013/5/2

New Page 1

مسئلہ ۱۲۱۰: از بنگالہ ضلع سلہٹ ڈاکخانہ کمال گنج موضع پھول ٹولی مرسلہ عبدالغنی صاحب ۲۰ شوال۱۳۱۷ ھ

کیا فرماتے ہیں علمائے دین اس مسئلہ میں کہ زید نے انتقال کیا اس پر کفارہ صوم وصلوٰۃ کا واجب تھا بسبب غربت کے ، حیات میں ادانہ کیا ، اب اس کے وارثوں نے قرض لے کر اس کی جانب سے ایک قرآن شریف ہدیہ مسکین کو دے دیا اس صورت میں کفارہ مذکورہ ذمہ زید سے ساقط ہوایا نہیں۔ بنیوا توجروا

الجواب

بازار کے بھاؤ سے وہ نسخہ مصحف شریف جس قیمت کا تھا بقدر اس کے کفارہ ادا ہونے کی امید ہے مثلاً دو روپیہ ہدیہ کا تھا تو دو روپے کے گیہو جتنے کفارے کو کافی ہوں وہی ادا ہوسکتا ہے باقی نماز روزے زید کے ذمے بدستور رہے، قرآن مجیدبیشک بے بہاہے اس کے ایک کلمے ایک حرف کی برابر ساتوں آسماں وزمین اور جو کچھ ان میں ہے برابر نہیں ہوسکتے، مگر ان امور میں اعتبار مالیت کا ہے ، قرآن عظیم مال نہیں۔ ہاں یہ کاغذ و جلد جو متضمن نقوش ہیں یہ مال انھیں کی قیمت ملحوظ ہوگی و بس ، ورنہی یوں تو جس پر دس کروڑ روپے کسی کے قرض آتے ہوں ایک کلمہ اﷲ پر چہ پر لکھ کردے دے اور دین سے ادا ہو کر بے شمار اس کا اس پر فاضل رہے وھذا کلہ ظاھر جدا ( اوریہ سارا اچھی طرح واضح ہے ۔ ت) واﷲ سبحنہ وتعالٰی اعلم