Encyclopedia

اولیاء اللہ کے نام کی جونذرمانی جاتی ہے اسے نذرلغوی کہتے ہیں اس کامعنی نذرانہ ہے جیسے کہ کوئی اپنے استاد سے کہے کہ یہ آپ کی نذرہے یہ بالکل جائز ہے یہ بندوں کی ہوسکتی ہے مگراس کاپورا کرناشرعاًواجب نہیں مثلاًگیارہویں شریف کی نذراورفاتحہ بزرگان دین وغیرہ جاء الحق، ص ۳۱۴
وہ پانی جو تنکے کو بہاکر لے جائے۔ بہار شریعت ،حصہ۲،ص۵۲
آفاقی:وہ شخص جومیقات کی حدو د سے باہر رہتا ہو۔
اِبْن سَبِیْل:ایسا مسافر جس کے پاس مال نہ رہاہو اگرچہ اس کے گھرمیں مال موجودہو۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۶۱)
اجارہ :کسی شے کے نفع کا عوض کے مقابل کسی شخص کومالک کردینااجارہ ہے۔(بہارشریعت ،حصہ ۱۴، ص۹۹
اجارہ فاسد :اس سے مرادوہ عقد فاسد ہے جواپنی اصل کے لحاظ سے موافق شرع ہومگراس میں کوئی وصف ایساہوجس کی وجہ سے(عقد)نامشروع ہومثلاًمکان کرایہ پردینااورمرمت کی شرط مُسْتاجِر(اجرت پرلینے والے)کے لیے لگانایہ اجارہ فاسدہے۔ (ماخوذ ازبہارشریعت ،حصہ ۱۴،ص۱۳۰،۱۳۲)
احرام:جب حج یا عمرہ یا دو۲ نوں کی نیت کرکے تلبیہ پڑھتے ہیں،تو بعض حلال چیز یں بھی حرام ہوجاتی ہیں اس لئے اس کو ”احرام ” کہتے ہیں ۔اور مجازاً ان بغیر سلی چادرو ں کو بھی احرام کہا جاتا ہے جن کو احرام کی حالت میں استعمال کیا جاتا ہے
اخفا: اظہار اور ادغام کی درمیانی حالت۔ علم التجوید ص 41
اِدْغام :ایک ساکن حرف کودوسرے متحرک حرف میں اس طرح ملاناکہ دونوں حروف ایک مشددحرف پڑھا جائے ۔ (علم التجوید،ص۴۱)
نبی سے جو خلاف ِعادت بات اعلان ِ نبوت سے پہلے ظاہر ہو اسے ارہاص کہتے ہیں بہار ِشریعت ج 1 ص58
اِسا ء ت :وہ ممنوع شرعی جس کی ممانعت کی دلیل حرام اورمکروہ تحریمی جیسی تو نہیں مگر اس کاکرنا برا ہے،یہ سنّتِ مؤکدہ کے مقابل ہے۔ ھمارااسلام ص ۲۱۵وبہارشریعت حصہ۲،ص۶
اِسْبَال :تہہ بند یا پائنچے کا ٹخنوں سے نیچے خصوصاً زمین تک پہنچتے رکھنااسبال کھلاتا ہے۔(ماخوذ ازفتاوی رضویہ، ج۲۱،ص ۳۷۶
8 اِستار :ساڑھے چارمثقال کاہوتاہے۔ (فتاوی رضویہ، ج۱۰،ص ۲۹۶
پیشاب کرنے کے بعد کوئی ایسا کام کرناکہ اگر کوئی قطرہ رکاہوتو گرجائے۔ بہار شریعت ،حصہ۲،ص۱۳۴
وہ خون جوعورت کے آگے کے مقام سے کسی بیماری کے سبب سے نکلے تو اسے استحاضہ کہتے ہیں۔   بہارشریعت ،حصہ۲،ص۹۳
نمازِاستخارہ :جس کام کے کرنے نہ کرنے میں شک ہو اس کوشروع کرنے سے پہلے دورکعت نفل پڑھنا پھر دعائے استخارہ کرنا۔ (دیکھئے تفصیل بہارشریعت، حصہ۴،ص۳۰،۳۱
بے باک فجار یا کفار سے جو بات ان کے موافق ظاہر ہو اسے استدراج کہتے ہیں   بہار ِشریعت ج  1  ص 58  
اِستِلام :حجرِا سود کو بو سہ دینا یا ہاتھ یا لکڑی سے چھو کر ہاتھ یا لکڑی کو چوم لینا یا ہاتھوں سے اس کی طر ف اشارہ کر کے انہیں چو م لینا ۔
اشاعره اہلسنت كا وه گروه جو فروعي عقائد ميں امام شيخ ابوالحسن اشعري رحمة الله عليه كا پيروكار ہے اشاعره كہلاتا ہے  بہارِشريعت ج1حصه 1 ص179
نمازِاِشراق:فجر کی نماز پڑھ کر سورج طلوع ہونے کے کم ازکم ۲۰منٹ بعد دو رکعت نفل ادا کرنا۔
اصحاب فرائض :اس سے مرادوہ لوگ ہیں جن کامعیّن حصہ قرآن وحدیث میں بیان کردیاگیاہے۔ ان کواصحاب فرائض کہتے ہیں۔ (تفصیل کے لیے دیکھئے بہارشریعت، حصہ ۲۰،ص۱۴
اِضطِباع:احرام کی اوپر والی چادر کوسیدھی بغل سے نکال کر اس طرح الٹے کندھے پر ڈالنا کہ سیدھا کندھا کھلارہے ۔
اِظْہار :حرف کواس کے مَخْرَج سے بغیر کسی تَغیُّر کے اورغُنّہ کے اداکرنے کوکہتے ہیں۔ علم التجوید،ص۴۰
اِعْتِجَار : سرپر رومال یاعمامہ اس طرح سے باندھنا کہ درمیان کا حصہ ننگارہے تویہ اعتجارہے۔ (نورالایضاح، ص۹۱
اکراہِ شرعی: اکراہ شرعی یہ ہے کہ کوئی شخص کسی کوصحیح دھمکی دے کہ اگر توفلاں کام نہ کریگاتومیں تجھے مار ڈالوں گا یا ہاتھ پاؤں توڑدوں گایاناک ،کان وغیرہ کوئی عضوکاٹ ڈالوں گایاسخت مارماروں گااوروہ یہ سمجھتاہوکہ یہ کہنے والاجوکچھ کہتاہے کرگزرے گا،تویہ اکراہ شرعی ہے۔ (ماخوذازبہارشریعت، حصہ۵ا،ص۴)
Yeh Raza Ka Chaman Hai Raza Ka Chaman
Ziyarat around the world

Google Map locations of famous shrines