Encyclopedia

عارِیت :دوسرے شخص کواپنی کسی چیز کی مَنْفعَت کابغیرعوض مالک کردیناعاریت ہے۔ (ماخوذ ازبہارشریعت، حصہ ۱۴،ص۵۱)
عاشِر :جسے بادشاہ اسلام نے راستہ پرمقررکردیاہوکہ تجارجواموال لے کرگزریں ،ان سے صدقات وصول کرے ۔ (بہار شریعت ،حصہ۵،ص۴۴
عامِل :وہ ہے جسے بادشاہ اسلام نے زکاۃ اورعُشروصول کرنے کے لیے مقررکیاہو۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۵۹)
عرض بلد :خط استواء سے کسی بلد کی قریب ترین دوری کوعرض بلد کہتے ہیں۔
عَرَفات:منیٰ سے تقریباًگیا۱۱رہ کلو میٹر دور میدان جہاں ۹ذوالحجہ کو تمام حاجی صاحبان جمع ہوتے ہیں ۔ عرفات حرم سے خارج ہے۔
وہ دس صحابہ جن کوسرکار دوعالم صلی اللہ تعالیٰ علیہ وسلم نے ان کی زندگی ہی میں ان کوجنت کی بشارت دی۔حضرت ابوبکرصدیق،حضرت عمرفاروق،حضرت عثمان غنی،حضرت علی المرتضی،حضرت طلحہ بن عُبَیْد اللہ ،حضرت زبیربن العوام،حضرت عبدالرحمن بن عوف،حضرت سعدبن ابی وقاص،حضرت سعیدبن زید،حضرت ابوعبیدہ بن الجراح رضی اللہ تعالی عنھم اجمعین فتاوی رضویہ ،ج۲۹،ص۳۶۳ وه […]
عَصْبہ:اس سے مراد وہ لوگ ہیں جن کاحصہ مقرر نہیں ،البتہ اصحاب فرائض کودینے کے بعد بچاہواما ل لیتے ہیں اوراگر اصحاب فرائض نہ ہوں تومیت کاتمام مال انھی کاہوتاہے۔(تفصیل کے لیے دیکھئے بہارشریعت، حصہ ۲۰،ص ۲۴)
ایک سرخ ،زرداورسفیدرنگ کاقیمتی پتھر
علامہ (عل لا مہ) ایک اعزازی خطاب (بعض او قات، بطور لقب) اسلامی فقہ یا بہت بڑے مسلمان عالم دین یا اسلامی فلسفہ کے ماہر کے لیے استعمال کیا جاتا ہے
1وہ علم کہ اپنی ذات سے بغیر کسی کی عطا کے ہو اسے علم ذاتی کہتے ہیں۔ اور یہ صرف اللہ عزوجل ہی کے ساتھ خاص ہے (فتاویِ رضویہ جلد29 ص 503)
وہ علم جو اللہ عزوجل کی عطا سے حاصل ہو اسے علم عطائی کہتے ہیں۔ فتاویِ رضویہ جلد29ص503  
علم ہیأت:وہ علم جس میں چاند ،سورج ،ستاروں،سیاروں کے طلوع وغروب ،کیفیت ووضع ،سمت ومقام کے متعلق بحث کی جاتی ہے۔
عملِ قلیل:جس کام کے کرنے والے کو دورسے دیکھنے والا اس شک وشبہ میں پڑ جائے کہ یہ نماز میں ہے یانہیں توعمل قلیل ہے۔ (درمختار،ج۲ ،ص ۴۶۴)
عملِ کثیر:جس کام کے کرنے والے کودورسے دیکھنے سے ایسالگے کہ یہ نماز میں نہیں ہے بلکہ گمان بھی غالب ہوکہ نمازمیں نہیں ہے تب بھی عمل کثیرہے۔ (درمختارمع ردالمحتار، ج۲، ص ۴۶۴و۴۶۵ )
:ایک ٹھوس مادہ جوباریک پیسنے کے بعدمہکتاہے یاآگ پرڈالنے سے خوشبو نکلتی ہے۔
Yeh Raza Ka Chaman Hai Raza Ka Chaman
Ziyarat around the world

Google Map locations of famous shrines