Tag: Islamic Terms

بنی ہاشم یا بنو ہاشم:ان سے مراد حضرت علی وجعفروعقیل اورحضرت عباس وحارث بن عبدالمطلب کی اولادیں ہیں۔ (بہارشریعت ،حصہ۵،ص۶۵)
مہرمؤجّل:وہ مہرجس کے لیے کوئی میعاد (مدت)مقرر ہو۔ (بہارشریعت ،حصہ۷ ،ص۶۶
مہرمعجل:وہ مہر جوخَلوت سے پہلے دیناقرارپائے۔ (بہارشریعت، حصہ۷ ،ص۶۶
اِبْن سَبِیْل:ایسا مسافر جس کے پاس مال نہ رہاہو اگرچہ اس کے گھرمیں مال موجودہو۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۶۱)
غارِم:اس سے مراد مدیون (مقروض)ہے یعنی اس پراتنادین ہوکہ اسے نکالنے کے بعد نصاب باقی نہ رہے۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۶۱)
عامِل :وہ ہے جسے بادشاہ اسلام نے زکاۃ اورعُشروصول کرنے کے لیے مقررکیاہو۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۵۹)
مسکین:وہ ہے جس کے پاس کچھ نہ ہویہاں تک کہ کھانے اوربدن چھپانے کے لیے اس کامحتاج ہے کہ لوگوں سے سوال کرے۔ (بہارشریعت، حصہ۵،ص۵۹
فقیر :وہ شخص ہے جس کے پاس کچھ ہومگرنہ اتناکہ نصاب کوپہنچ جائے یانصاب کی مقدار ہوتواس کی حاجت اصلیہ میں استعمال ہورہا ہو۔ (ماخوذ ازبہارشریعت، حصہ۵،ص۵۹
بیع وفا:اس طورپربیع کرناکہ جب بائع مشتری کوثمن واپس کرے تومشتری مبیع کوواپس کردے۔ (ماخوذ ازبہارشریعت ،حصہ۵،ص۵۵)
مستامن :اس کافر کوکہتے ہیں جسے بادشاہ اسلام نے امان دی ہو۔ (فتاوی فیض الرسول، ج۱،ص۵۰۱
ذمی :اس کافرکوکہتے ہیں جس کے جان ومال کی حفاظت کابادشاہ اسلام نے جزیہ کے بدلے ذمہ لیاہو۔ (فتاوی فیض الرسول، ج۱،ص۵۰۱)
خراج مؤظّف :اس سے مرادیہ ہے کہ ایک مقدارمعیّن لازم کردی جائے خواہ روپے یاکچھ اورجیسے فاروق اعظم رضی اللہ تعالیٰ عنہ نے مقررفرمایاتھا۔ (ماخوذازفتاوی رضویہ ،ج۱۰،ص۲۳۷
خراج مُقاسمہ :اس سے مرادیہ ہے کہ پیداوارکاکوئی آدھاحصہ یاتہائی یاچوتھائی وغیرہامقررہو۔ (ماخوذازفتاوی رضویہ، ج۱۰،ص ۲۳۷)
خیارِعیب:بائع کا مبیع کو عیب بیان کئے بغیر بیچنا یامشتری کا ثمن میں عیب بیان کیے بغیر چیز خریدنااور عیب پر مطلع ہونے کے بعداس چیز کے واپس کردینے کے اختیار کو خیار عیب کہتے ہیں۔(ماخوذازبہارشریعت، حصہ۱۱، ص۶۰
خِیارِرؤیت :مشتری کابائع سے کوئی چیز بغیردیکھے خریدنااوردیکھنے کے بعداس چیز کے پسندنہ آنے پربیع کے فَسْخ (ختم)کرنے کے اختیار کوخیاررؤیت کہتے ہیں۔ (ماخوذازبہارشریعت ،حصہ۱۱، ص۴۹
ایام بِیْض:چاندکی۱۳،۱۴،۱۵ تاریخ کے دن۔ (ماخوذازبہارشریعت ،حصہ۵،ص۱۴۷
ایامِ مَنْہیَّہ:یعنی عیدالفطر،عیدالاضحی اورگیارہ ،بارہ ،تیرہ ذی الحجہ کے دن کہ ان میں روزہ رکھنامنع ہے اسی وجہ سے انھیں ایام منہیہ کہتے ہیں۔ (ماخوذاز بہارشریعت ،حصہ۵،ص۱۵۰
دَیْن مُعَجَّل :وہ قرض جس میں قرض دَہنْدہ (قرض دینے والے)کوہروقت مطالبے کااختیارہوتاہے۔ (ماخوذاز فتاوی رضویہ ،ج۱۰،ص۲۴۷)
دَینِ مِیْعادی :ایسا قرض جس کے ادا کرنے کا وقت مقرر ہو۔ (ماخوذاز فتاوی رضویہ، ج۱۰،ص ۲۴۷
خیارِشرط :بائع اورمشتری کاعقد میں یہ شرط کرنا کہ اگرمنظور نہ ہوا توبیع باقی نہ رہے گی اسے خیارشرط کہتے ہیں (ماخوذازبہارشریعت ،حصہ۱۱ ،ص۳۶)
اجارہ فاسد :اس سے مرادوہ عقد فاسد ہے جواپنی اصل کے لحاظ سے موافق شرع ہومگراس میں کوئی وصف ایساہوجس کی وجہ سے(عقد)نامشروع ہومثلاًمکان کرایہ پردینااورمرمت کی شرط مُسْتاجِر(اجرت پرلینے والے)کے لیے لگانایہ اجارہ فاسدہے۔ (ماخوذ ازبہارشریعت ،حصہ ۱۴،ص۱۳۰،۱۳۲)
اجارہ :کسی شے کے نفع کا عوض کے مقابل کسی شخص کومالک کردینااجارہ ہے۔(بہارشریعت ،حصہ ۱۴، ص۹۹
عاشِر :جسے بادشاہ اسلام نے راستہ پرمقررکردیاہوکہ تجارجواموال لے کرگزریں ،ان سے صدقات وصول کرے ۔ (بہار شریعت ،حصہ۵،ص۴۴
دَینِ ضعیف :وہ دین جوغیرمال کابدل ہومثلاًبدلِ خلع وغیرہ۔ (بہارشریعت ،حصہ۵،ص۴۱
دَینِ متوسط :وہ دین جوکسی مال غیرتجارتی کابدل ہو،مثلاًگھرکاغلہ یاکوئی اور شے حاجت اصلیہ کی بیچ ڈالی اور اس کے دام خریدار پرباقی ہیں ۔ (ماخوذ ازبہارشریعت، حصہ۵،ص۴۱
Yeh Raza Ka Chaman Hai Raza Ka Chaman
Ziyarat around the world

Google Map locations of famous shrines